بلوچستان کا بجٹ پیش نہ ہو سکا ، 14مئی تک موخر

جمعہ مئی 23:22

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) بلوچستان کے رواں مالی سال کا بجٹ محکمہ پی اینڈ ڈی کی تیاری مکمل نہ ہونے کے باعث پیش نہ ہو سکا بجٹ 14 مئی کو شام 4 بجے مشیر خزانہ ڈاکٹر رقیہ ہاشمی بلوچستان اسمبلی میں بجٹ پیش کریں گی۔میڈیارپورٹس کے مطابق بلوچستان حکومت میں مبینہ طور پر ا ختلافات کی وجہ سے نئے مالی سال 2018-19کا بجٹ پیش نہیں ہوسکا۔

صوبائی حکومت نے بجٹ اجلاس 14مئی تک موخر کردیا ۔ بجٹ کی منظوری کیلئے کابینہ کا اجلاس صوبائی وزراء کے اختلافات کی نذر ہوگیا۔

(جاری ہے)

وزراء میں اختلافات ترقیاتی منصوبوں پر سامنے آئے ۔وزراء اپنے اپنے حلقے کیلئے منصوبے دینے پر بضد رہے جس کی وجہ سے بجٹ منظوری اجلاس ملتوی کردیا گیا۔ یادرہے بلوچستان کا مالی سال 2018-19کے خسارے کا بجٹ جمعہ کو پیش کیا جانا تھا۔ بجٹ کا کل حجم 353ارب سے زائد بتایا گیا ہے ۔ مجموعی آمدن کا تخمینہ 290ارب 29کروڑ جبکہ دیگر ذرائع سے آمدنی کا تخمینہ 22ارب سے زائد ہے۔ بجٹ میں خسارے کا تخمینہ 60ارب روپے سے زائد ہونے کا امکان ہے تاہم آئندہ مالی سال کے بجٹ میں ملازمین بجٹ اجلاس 14مئی تک موخر کردیا گیا ۔ وزراء میں اختلافات ترقیاتی منصوبوں پر سامنے آئے۔