فیصل آباد میں خسرے کی وباء پھوٹ پڑی 182متاثرہ بچے مختلف سرکاری ہسپتالوں میں داخل ،

خسر ے سے بچا ئو کی ویکسین ایکسپا ئر یا جعلی ہونے سے متعلق شکوک و شبہات کا اظہار محکمہ صحت کی کار کردگی پر سوا لیہ نقصان ،متاثرہ بچوں کو خسرے سے بچا ئو کی ویکسین بھی لگ چکی ہے

جمعہ مئی 23:40

فیصل آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) فیصل آباد میں خسرے کی وباء پھوٹ پڑی، 182متاثرہ بچے مختلف سرکاری ہسپتالوں میں داخل کیا خسر ے سے بچا ئو کیویکسین ایکسپا ئر یا جعلی ہونے سے متعلق شکوک و شبہات کا اظہار متاثرہ بچوں کو خسرے سے بچا ئو کی ویکسین بھی لگ چکی ہے تفصیل کے مطا بق فیصل آباد ریجن میں 5سال تک کے بچوں میں خسرے کی ویکسین لگا ئے جا نے کے باوجود خسرے کی وباء پھوٹ پڑی الائیڈ ہسپتال پنجاب میڈیکل یو نیورسٹی سمیت مختلف سرکاری ہسپتا لوں میں182 متاثرہ بچے دا خل جن میں سے 96بچے صرف الائیڈ ہسپتال کی آئسو لیشن وارڈ میں زیر علاج ہیںالائیڈ ہسپتال میںدا خل ہو نے والے متاثرہ بچوں میں زیادہ تعداد جھنگ اور چنیوٹ کے بچوں کی ہے خسرے کی وباء پھوٹنے کے بعد محکمہ صحت کی کارکردگی پر سوا لیہ نقصان لگ گیا۔

(جاری ہے)

محکمہ صحت ذرائع کے مطا بق متاثرہ بچوںکو لگا ئی جا نے والی ویکسین ناقص اورایکسپائر تھی جن علاقوںمیں یہ ویکسین استعمال کی گئی انہی علاقوں میں کم عمر بچوں کی زیادہ تعداد متا ثر ہو ئی ذرائع نے بتا یا کہ وزیر اعلی پنجاب نے نوٹس لے لیا ہے اور محکمہ صحت نے ذمہ داروں کے خلاف سخت کاروا ئی کا فیصلہ بھی کر لیا ہے ۔

متعلقہ عنوان :