آرمینیا سے تعلقات کی بحالی اس ملک کے مثبت موقف سے مشروط ہے، ترک وزیر اعظم

ہفتہ مئی 10:20

انقرہ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 مئی2018ء) ترکی کے وزیر اعظم بن علی یلدرم نے کہا ہے کہ اگر آرمینیا ترکی کے خلاف دشمنانہ مؤقف سے باز آجاتا ہے تو پھر ترکی بھی اپنے مؤقف میں تبدیلیاں لائے گا۔

(جاری ہے)

ترک نشریاتی ادارے کے مطابق وزیر اعظم یلدرم نے آرمینی وزیر اعظم نکول پاشین یان کے بیان کہ" ہم ترکی کے ساتھ ا پیشگی شرائط کے بغیر سفارتی تعلقات قائم کرنے کے لیے تیار ہیں" کے حوالے سے انقرہ میں اخباری نمائندوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہاکہ "اگر آرمینیا سالہا سال سے جاری ترکی مخالف مؤقف ، ترکی کی زمینی سالمیت اور سرحدوں پر غیر موزوں عمل درآمد سے باز آتے ہوئے کسی نئے باب کا آغاز کرنے کا متمنی ہے تو ہم ان معاملات کی تفصیلات کا بغور جائزہ لینے کے بعد جوابی اقدام اٹھا سکتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ہم کسی کے ساتھ بھی نہیں اور بالخصوص ہمسایہ ملک کے ساتھ دشمنی کرنے کی بالکل خواہش نہیں رکھتے تاہم اگر آرمینیا نے عملی طور پر نیک نیتی کا مظاہرہ کیا تو ہم بھی اپنے ملک کے مفاد کو بالائے طاق رکھتے ہوئے قدم اٹھائیں گے۔

متعلقہ عنوان :