میشا شفیع کا علی ظفر پر جنسی ہراسانی کے الزام

میشا شفیع نے علی ظفر کے قانونی نوٹس کا جواب دے دیا

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین ہفتہ مئی 11:44

میشا شفیع کا علی ظفر پر جنسی ہراسانی کے الزام
کراچی (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 12 مئی 2018ء) : پاکستان کی گلوکارہ ، اداکارہ و ماڈل میشا شفیع نے ساتھی گلوکار علی ظفر کے قانونی نوٹس کا جواب دے دیا ہے۔ علی ظفر کے قانونی نوٹس کے جواب میں میشا شفیع نے بھی ان کو ایک نوٹس بھجوادیا ، یہ نوٹس میشا شفیع کی وکلا ٹیم کی جانب سے علی ظفر کو بھجوایا گیا۔نوٹس کے جواب میں کہا گیا کہ علی ظفر پرعائد کیے جانے والے تمام الزامات درست ہیں،الزامات کے پیچھے کسی قسم کی کوئی سازش نہیں ہے۔

میشا شفیع نے نوٹس کے جواب میں کہا کہ علی ظفر نے مجھے کام کے دوران ہراساں کیا۔ نوٹس میں مزید کہا گیاکہ علی ظفر غلطیوں کا اعتراف کر کے لیگل نوٹس واپس لیں اور معافی مانگیں۔ یاد رہے کہ پاکستانی اداکارہ ، ماڈل اور گلوکارہ میشا شفیع نے اپنے ٹویٹر پیغام میں پاکستانی گلوکار علی ظفر پر جنسی ہراسگی کا الزام عائد کیا تھا۔

(جاری ہے)

اپنے ٹویٹر پیغام میں میشا شفیع نے بتایا کہ کس طرح ان کے ساتھ کام کرنے والے گلوکار علی ظفر نے انہیں جنسی ہراسگی کا نشانہ بنایا۔

انہوں نے کہا کہ میں یہ سب اس لیے کہہ رہی ہوں کیونکہ اب میرا ضمیر مجھے خاموش رہنے کی اجازت نہیں دیتا۔ میں ایسے معاملات پر خاموشی کے کلچر کو توڑنا چاہتی ہوں، انہوں نے کہا کہ اگر ایسا مجھ جیسی خاتون کے ساتھ ہو سکتاہے تو انڈسٹری میں آنے والی اور آنے کی خواہش رکھنے والی کسی بھی خاتون کے ساتھ ہو سکتا ہے۔ اس معاملت پر بولنا مشکل ہے لیکن خاموش رہنا کسی طور درست نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں نے جنسی ہراسگی کا سامنا ایک خوبرو اور جوان لڑکی ہونے پر نہیں کیاگیا بلکہ مجھے اس سب کا سامنا تب کرنا پڑا جب میں خواتین کے حقوق کے لیے آواز اُٹھاتی ہوں، جب میں دو بچوں کی والدہ ہوں۔میشا شفیع نے ساتھی گلوکار علی ظفر پر جنسی ہراسانی کا الزام عائد کیا تو علی ظفر نے اس الزام کو مسترد کرتے ہوئے قانونی راستی اپنانے کا اعلان کیا ۔ دونوں گلوکاروں نے ایک دوسرے کے خلاف اس معاملے پر قانونی جنگ کا فیصلہ کیا ہے۔ علی ظفر نے الزامات عائد کرنے پر میشا شفیع کو ہرجانے کا نوٹس بھی بھجوایا جس کے لیے میشا شفیع نے اپنی قانونی ٹیم کو نوٹس کا جواب دینے کے لیے مقرر کیا تھا۔

متعلقہ عنوان :