لیبیا کی حکومت کا تینوں اشتہاریوں کوعالمی فوجداری عدالت کے حوالے کرنے سے انکار

سیف الاسلام قذافی اوردیگراشتہاریوں کی گرفتاری کے لیے عالمی عدالت نے سلامتی کونسل سے مدد مانگ لی

ہفتہ مئی 11:50

طرابلس(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 مئی2018ء) بین الاقوامی عدالت انصاف نے سلامتی کونسل کو درخواست دی ہے کہ وہ لیبیا کے مقتول لیڈر معمر قذافی کے بیٹے سیف الاسلام اور دو دیگر اشتہاریوں کی گرفتاری کے لیے عدالت کی مدد کرے۔عرب ٹی وی کے مطابق عالمی عدالت انصاف کی طرف سے یہ درخواست اس وقت دی گئی جب لیبیا کی حکومت نے تینوں اشتہاریوں کوآئی سی سی کے حوالے کرنے سے انکار کردیا۔

(جاری ہے)

عالمی فوج داری عدالت کی طرف سے کہا گیا کہ لیبی فوج کے ایک افسر محمود الورفلی، سیف الاسلام القذافی اور قذافی کے دور کے انٹیلی جنس چیف التھامی بن خالد کے خلاف جنگی جرائم کے الزامات عاید ہیں۔ ان پر الزام ہے کہ وہ اپوزیشن کارکنوں کے خلاف ناروا سختیوں اور جنگی جرائم کے مرتکب ہوئے ہیں۔۔عدالت کا کہنا تھا کہ وہ جنگی جرائم میں مطلوب تینوں لیبی ملزمان کی گرفتاری میں ناکام رہی ہے۔ اس لیے معاملے کو سلامتی کونسل میں پیش کیا جا رہا ہے۔

متعلقہ عنوان :