جب جاوید ہاشمی جیل میں تھے تو شریف برادران نے کیا کیا تھا؟

شریف برادران کو جاوید ہاشمی سے کس بات کا ڈر تھا؟

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین ہفتہ مئی 12:17

جب جاوید ہاشمی جیل میں تھے تو شریف برادران نے کیا کیا تھا؟
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 12 مئی 2018ء) ::نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے معروف تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے کہا کہ ن لیگی رہنماﺅں نے جیلیں کاٹی ہیں ، جاوید ہاشمی کی مسلم لیگ ن میں دوبارہ شمولیت پر میں اس بات پر نہیں جانا چاہتا کہ جاوید ہاشمی کے مسلم لیگ ن چھوڑنے پر مریم نواز نے کیا ٹویٹ کیا تھا ، جاوید ہاشمی نے زندہ تاریخ کے نام سے ایک کتاب لکھی تھی جس میں انہوں نے بتایا کہ کس طرح ن لیگی ان کی بیٹی میمونہ کو نظر انداز کرتے تھے ، میں اس بات پر نہیں جانا چاہتا کہ مخدوم جاوید ہاشمی کے گھر میں جب کسی کا انتقال ہواتو نواز شریف نے کیوں افسوس نہیں کیا۔

لیکن ایک انہوں نے چھوٹا سا واقعہ لکھا،کہ جب میاں نواز شریف اور شہباز شریف لندن میں تھے، تو انہوں نے لندن میں ایک شخص قیصر شیخ کو بُلوایا، یہ تینوں لندن میں بیٹھے ہوئے تھے تو شہباز شریف نے ان کو کہا کہ تم یہ کیا کر رہے ہو؟انہوں نے پوچھا میں کیا کر رہا ہوں سر؟ انہوں نے کہا کہ تم ہماری جگہ جاوید ہاشمی کو لیڈر بنا رہے ہو۔

(جاری ہے)

قیصر شیخ نے کہا کہ سر وہ تو جیل کاٹ رہے ہیں ، میں تو آپ کی مدد کر رہا تھا۔

جس پر انہوں نے قیصر شیخ کو جھاڑ پلا دی اور کہا کہ یہ سب کچھ بند کرو، اس کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔اس کے بعد قیصر شیخ نے جاوید ہاشمی نے معذرت کردی،اور یہی وہ وقت تھا جب جاوید ہاشمی کی حوصلہ شکنی کا دور شروع ہوا جس کے بعد وہ باغی ہو گئے۔ اس کے علاوہ بھی ان کی کتاب میں بہت کچھ ہے لیکن وہ مسلم لیگ ن میں واپس چلے گئے ہیں یہ ان کا اپنا فیصلہ ہے۔ ان کے سیاست میں بہت سے تضادات ہیں لیکن بطور انسان وہ ایک بہادر آدمی ہیں۔ خیال رہے کہ گذشتہ روز پاکستان مسلم لیگ ن نے ملتان میں اپنی سیاسی قوت کا مظاہرہ کیا۔ اس جلسے میں سینئیر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے مسلم لیگ ن میں دوبارہ شمولیت کا باقاعدہ اعلان کیا تھا۔