عراق ؛داعش کا مکمل خاتمہ،عام انتخابات کیلئے پولنگ کا آغاز،سیکورٹی کے سخت انتظامات

وزیراعظم حیدر العبادی اور سابق وزیراعظم نوری المالکی میدان میں آمنے سامنے

ہفتہ مئی 15:47

بغداد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 مئی2018ء) عراق میں داعش کی شکست کے بعد پہلے عام انتخابات کے لیے پولنگ کا آغاز ہوگیا ہے،اس موقع پر سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔ہفتہ کو ترجمان عراقی الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق انتخابات میں 329 نشستوں کے لیے 7 ہزار امیدواروں میں مقابلہ ہے۔عراقی انتخابات میں وزیراعظم حیدر العبادی اور سابق وزیراعظم نوری المالکی بھی میدان میں ہیں۔

(جاری ہے)

جبکہ 2008 میں سابق امریکی صدر جارج ڈبلیو بش پر جوتا اچھالنے والے صحافی منتظر الزیدی بھی انتخابات میں بطور امیدوار شریک ہیں۔۔انتخابات سے قبل 9 لاکھ سے زائد پولیس اور فوجی اہلکاروں نے اپنے ووٹ کاسٹ کیے۔واضح رہے کہ عراق کے وزیراعظم حیدر العبادی نے 9 دسمبر 2017 کو عالمی دہشتگرد تنظیم داعش کے خلاف 3 سالہ جنگ میں فتح کا اعلان کیا تھا۔۔وزیراعظم حیدر العبادی نے ایک پریس کانفرنس کے دوران بتایا تھا کہ عراقی فورسز نے شام سے متصل سرحدی علاقوں کا مکمل کنٹرول حاصل کرلیا ہے اور عراق کے اندر جاری جنگ میں بھی دہشت گرد تنظیم کو مکمل شکست دے دی گئی ہے۔۔داعش نے 2014 میں بغداد سمیت عراق کے شمال اور مغرب میں بڑے پیمانے پر قبضہ کرتے ہوئے خودساختہ خلافت قائم کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔