احتجاج عوام کا حق ہوتا ہے لیکن پرامن مظاہرین پر لاٹھی چار ج کی دھمکیاں دینا قائم مقام صدر کے عہدے کی توہین ہے‘

سپیکر چیمبر کے گیٹ پر آئے روز سائیلین کی تذلیل سے عوام کے جذبات کو مجروح کیا جا رہا ہے مسلم کانفرنس کے رہنماء حبیب اللہ خان کی بات چیت

ہفتہ مئی 19:56

آٹھ مقام(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 مئی2018ء) مسلم کانفرنس کے رہنماء حبیب اللہ خان نے کہا ہے کہ احتجاج عوام کا حق ہوتا ہے لیکن پرامن مظاہرین پر لاٹھی چار ج کی دھمکیاں دینا قائم مقام صدر کے عہدے کی توہین ہے۔ سپیکر چیمبر کے گیٹ پر آئے روز سائیلین کی تذلیل سے عوام کے جذبات کو مجروح کیا جا رہا ہے۔ وادی نیلم میں سپیکر اسمبلی نے جو انارکی بھیلا رکھی ہے اس کا وہ خود ذمہ دار ہے پرانے منصوبوں پر تختیاں لگا کر عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

سپیکر یہ بتائے کہ گذشتہ سال کے بجٹ کاکون سا منصوبہ اس نے شروع کیا ہے۔ ابھی آمدہ بجٹ میں وادی نیلم کے لئے کتنے میگا منصوبہ جات رکھے گئے ہیں۔ سابق ادوار کے مکمل یا رکھے گئے منصوبہ جات پر تختیاں لگا کر کسی کے حق پر شب خون مارنا کوئی مردانگی نہیں بلکہ ہیجڑا پن ہے۔

(جاری ہے)

احتجاج کرنے والوں پرغلام قادر کی طرف سیلاٹھی چارج کرنے کے احکامات جلتی پر تیل ڈالنے کے مترادف ہے۔

پہلے شاید معمول کا احتجاج ہوتالیکن اب نیلم کے تین لاکھ عوام احتجاج میں شریک ہو رہے ہیں۔ گذشتہ دوسالوں میں چپڑاسی کی آسامی بھی تخلیق نہیں ہوئی بلکہ الٹا نیلم کی آسامیوں کو منتقل کیا جا رہا ہے۔ سابق اداور میں نیلم میں تعمیر ترقی کا تسلسل برقرار رہا لیکن مسلم لیگ ن کی حکومت وادی نیلم کے لئے چراخ بیگ ثابت ہوئی ہے۔ شاہ غلام قادر نے لاٹھی چارج کا حکم دے کر نیلم کے تین لاکھ عوام کی توہین کی ہے موصوف نیلم کی نمائندگی کے اب اہل نہیں رہا بدکردار آدمی فوری طور پر ستعفیٰ دے کر عوام سے غیر مشروط معافی مانگے بصورت دیگر کسی بھی رد عمل کا خود ذمہ دار ہوگا۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :