وزیراعلی شہبازشریف کی مختلف سفیروں سے ان کی قومی زبان میں گفتگو

شہبازشریف گریٹ فارم میں ہیں !مشاہد حسین سید کا خراج تحسین وزیراعلی نے عالمی سفارتی نمائندوں کے سامنے قومی اور صوبائی امور پیش کئے سویڈن کا منی سی پیک اور سی ان پیک

ہفتہ مئی 20:36

وزیراعلی شہبازشریف کی مختلف سفیروں سے ان کی قومی زبان میں گفتگو
اسلام آباد /لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 مئی2018ء) پاکستان مسلم لیگ (ن( کے صدر اور وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف اسلام آباد کے مقامی ہوٹل میں سفارتی نمائندوں کی پنجاب کانفرنس میں شرکت کے لئے پہنچے تو سفارتکاروں نے تالیاں بجا کر ان کا استقبال کیا - پنجاب کانفرنس میں 50سے زائد سفارتی نمائندوں ، سفیروں، ہائی کمشنر زنے شرکت کی - وزیراعلی نے اپنے خطاب میں سفارتکاروں کی آمد پر پرتپاک انداز میں شکریہ ادا کیا اور کہاکہ پاکستان مسلم لیگ(ن) کی صدارت کا منصب سنبھالنے کے بعد آپ سے پہلی ملاقات میرے لئے بے حد اہمیت کی حامل ہی-وزیراعلی نے اپنے فکر انگیز اور مدلل انداز میں مختلف قومی اور صوبائی امو رپر گفتگو کی -تقریب کے آغاز میں حکومت پنجاب کے مختلف اختراعی اقدامات اور ترقیاتی منصوبوں کے بارے میں دستاویز ی فلم پیش کی گئی- تقریب کی نظامت کے فرائض سینیٹر مشاہد حسین سید نے سرانجام دئیی-سینیٹر مشاہد حسین سید نے کہاکہ وزیراعلی پنجاب محمد شہبازشریف آج کل گریٹ فارم میں ہیں -وزیراعلی شہبازشریف نے سوال وجواب کے سیشن میں عربی ، فرنچ ،انگریزی اور دیگر زبانوں میں گفتگو کی-مختلف ممالک کے سفیر وزیراعلی شہبازشریف کو اپنی قومی زبا ن میں شستہ اور روا لہجے میں گفتگو کرتے دیکھ کر خوشگوار حیرت کا شکار ہوئی-وزیراعلی نے پنجاب میں تعلیم ،صحت ،زراعت ،ٹیکنیکل ایجوکیشن ،خواتین کی ترقی اور دیگر امور کے بارے میں سیر حاصل گفتگو کی- وزیراعلی نے اپنی گفتگو کے دوران سی پیک کو افادیت کے لحاظ سے Sea in Packقرار دیاتو حاضرین نے پرجوش تالیاں بجائیں-انہوںنے کہاکہ ہم وقت کی رفتار کے ساتھ بھاگ رہے ہیں-وزیراعلی نے ٹریفک مینجمنٹ کے لئے سویڈن کے تعاون کو ’’سویڈش منی سی پیک قرار دیا‘‘وزیراعلی کے ساتھ تقریب میں وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگ زیب ، سرتاج عزیز ، ہارون اختر خان ، صوبائی وزیر خزانہ ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا، مشاہد حسین سید ، چیف سیکرٹری ، آئی جی پنجاب ، دیگر متعلقہ صوبائی سیکرٹریز بھی موجو د تھی-حاضرین نے مختلف زبانیں بولنے پر وزیراعلی شہبازشریف کو ہفت زباں وزیراعلی قرار دیا-وزیراعلی نے گفتگو کا اختتام علامہ اقبال کے شعر پر کیا -انہوںنے کہاکہ تہران او رانقرہ میں علامہ اقبال کو اقبال لاہوری کہا جاتاہے - انہوںنے اقبال کااردو شعر سنایا او ر انگریزی میں ترجمہ کر کے اس کی وضاحت کی - جہان تازہ کی افکار تازہ سے ہے نمود....کہ سنگ و خشت سے ہوتے نہیں جہاں پیدا