چوہدری نثار کاٹیکسلا واہ سے قومی اسمبلی کی نشست پر الیکشن لڑنے کا فیصلہ

علاقے کے عوام کے جذبات اور ان کے احساسات کی قدر کرتا ہوں اور انکے اعتماد پر نہ صرف بے حد شکر گزار بلکہ اسے اپنا اثاثہ سمجھتاہوں ، ٹیکسلا واہ کی عوام کے ساتھ گہرا رشتہ ہے جو ہمیشہ قائم رہے گا، علاقے کی عوام نے جو عزت دی ہے ہمیشہ اس کیلئے مشکور رہوں گا اور اپنی استطاعت کے مطابق اس علاقے کی خدمت جاری رکھیں گے، ٹیکسلا واہ جیسے تاریخی مقام اور اس میں بسنے والے غیور عوام کی نمائندگی کرنا یقینا میرے لیے بھی باعث فخر ہوگا تاہم حلقے سے بیک وقت قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر الیکشن لڑنا مشکل ہوگا،عوام کی خواہشات کے مدنظروہ قومی اسمبلی کی نشست پر این اے 63سے الیکشن میں حصہ لوں گا لیکن صوبائی نشست کے حوالے سے فی الوقت کوئی فیصلہ نہیں کر سکتا،سابق وزیر داخلہ کا عوامی اجتماع سے خطاب چوہدری نثار کی چونتیس برس پر محیط اصولی سیاست علاقے کے عوام کیلئے باعثِ افتخار ہے اور انکی قیادت کا کوئی نعم البدل نہیں،ٹیکسلا واہ کا منتخب نمائندہ نہ ہونے کے باوجود بھی گذشتہ پانچ سالوں میں چوہدری نثار نے اس علاقے کی تعمیر و ترقی اور عوام کی خوشحالی کے لئے جو مثالی خدمات سر انجام دی ہیں وہ کسی تعارف کی محتاج نہیں،وفد کی گفتگو

ہفتہ مئی 22:05

ٹیکسلا (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 مئی2018ء) نئی انتخابی حلقہ بندیوں کی تشکیل کے نتیجے میں حلقہ علیحدہ ہونے کے باوجودسابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے ٹیکسلا واہ سے قومی اسمبلی کی نشست این ای63 سے الیکشن لڑنے کا اعلان کردیا۔ہفتہ کو یہ فیصلہ انہوں نے این اے 63میں شامل یونین کونسلز کے چیئرمینوں، وائس چیئرمینوں،علاقہ معززین اور اکابرین پر مشتمل ایک مشاورتی اجلاس کے بعد کیا جو بعد ازاں ایک کثیر التعداد عوامی اجتماع میں تبدیل ہوگیا۔

مشاورتی اجلاس میں شامل اراکین نے یک زبان ہو کر نہایت جذباتی انداز میں چوہدری نثار علی خان سے اپیل کی کہ باوجود اس کے کہ نئی حلقہ بندیوں کے نتیجے میں ان کا علاقہ چوہدری نثار علی خان کے حلقے سے علیحدہ کر دیا گیا ہے تاہم وہ ٹیکسلا واہ کی عوام کے جذبات اور خواہشات کو مد نظر رکھتے ہوئے این اے 63 سے الیکشن میں حصہ لیں اور اس علاقے سے انکی نمائندگی کریں۔

(جاری ہے)

وفد نے کہا کہ چوہدری نثار علی خان کی چونتیس برس پر محیط اصولی سیاست علاقے کے عوام کے لئے باعثِ افتخار ہے اور انکی قیادت کا کوئی نعم البدل نہیں۔ٹیکسلا واہ کا منتخب نمائندہ نہ ہونے کے باوجود بھی گذشتہ پانچ سالوں میں چوہدری نثار علی خان نے اس علاقے کی تعمیر و ترقی اور عوام کی خوشحالی کے لئے جو مثالی خدمات سر انجام دی ہیں وہ کسی تعارف کی محتاج نہیں۔

عوام الناس کی بنیادی ضروریات سے متعلقہ اربوں رو پے کے ترقیاتی منصوبوں سے لیکر ٹیکسلا واہ کے محنت کشوں اور مزدورں کے حقوق کے تحفظ کے سلسلے میں چوہدری نثار علی خان جو کردار ادا کرتے رہے ہیں اس کی ماضی میں کوئی نظیر نہیں ملتی۔ وفد کی جانب سے بھرپور اصرار کیا گیا کہ چوہدری نثار علی خان ٹیکسلا واہ سے ایک قومی اور ایک صوبائی نشست پر الیکشن میں حصہ لیں۔

عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ وہ اس علاقے کے عوام کے جذبات اور ان کے احساسات کی قدر کرتے ہیں اور انکے اعتماد پر نہ صرف بے حد شکر گزار ہیں بلکہ وہ اسے اپنا اثاثہ سمجھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکسلا واہ کی عوام کے ساتھ انکا گہرا رشتہ ہے جو ہمیشہ قائم رہے گا۔ اس علاقے کی عوام کی ان کو جو عزت دی ہے وہ ہمیشہ اس کے لئے مشکور رہیں گے اور اپنی استطاعت کے مطابق اس علاقے کی خدمت جاری رکھیں گے۔

چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ ٹیکسلا واہ جیسے تاریخی مقام اور اس میں بسنے والے غیور عوام کی نمائندگی کرنا یقینا ان کے لئے بھی باعث فخر ہوگا تاہم ان کے لیے اس حلقے سے بیک وقت قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر الیکشن لڑنا مشکل ہوگا کیونکہ وہ پہلے ہی ایک قومی اور دو صوبائی نشستوں سے الیکشن میں حصہ لینے کا اعلان کر چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عوام کی خواہشات کے مدنظروہ قومی اسمبلی کی نشست پر این اے 63سے الیکشن میں حصہ لیں گے لیکن صوبائی نشست کے حوالے سے وہ فی الوقت کوئی فیصلہ نہیں کر سکتے۔

اجلاس کے شرکا کی جانب سے چوہدری نثار علی خان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اس یقین دہانی کا اعادہ کیا گیا کہ ٹیکسلا واہ کی عوام آئندہ الیکشن میں چوہدری نثار علی خان کو ریکارڈ کامیابی سے ہمکنار کرائے گی۔