الیکشن 2018ء ،ضلع ہری پور سے چند شخصیات اپنی پارٹیوں کو خیر آباد کہنے کیلئے تیار

ن والے پی ٹی آئی اور پی ٹی آئی والے پی پی کی کشتیوں میں سوار ہو جانے کا قوی امکان

ہفتہ مئی 22:51

ہری پور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 مئی2018ء) آمدہ الیکشن 2018ء ضلع ہری پور سے تعلق رکھنے والی چند شخصیات چند دنوں میں اپنی اپنی پارٹیوں کو خیر آباد کہنے کیلئے تیار، الیکشن کا اعلان ہوتے ہی ن والے پی ٹی آئی اور پی ٹی آئی والے پی پی کی کشتیوں میں سوار ہو جانے کا قوی امکان ۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق آمدہ انتخابات میں ضلع ہری پور کی 3صوبائی اسمبلی کی نشستوں اور ایک قومی اسمبلی کی نشست کیلئے پرانے سیاستدانوں کے علاوہ بیشتر نئے چہرے بھی سامنے آنا شروع ہو گئے اور ان نئے چہروں کا تعلق ن ،پی ٹی آئی اور دیگر جماعتوں سے ہے اور بعض آزاد بھی ہیں اور نئے چہروں میں سے اکثریت اپنی اپنی پارٹی ٹکٹوں کے بھی دعویدار ہیں اور یقین ہے کہہ رہے ہیں کہ ٹکٹ انہی کو ملے گا سیاست سے تعلق رکھنے والے زرائع نے انکشاف کیا کہ آمدہ الیکشن کا اعلان ہوتے ہیں ضلع ہری پور میںچاروں سیٹوں پر سیاسی دھماکے ہونے اور سیاسی اپ سیٹ ہونے کا امکان رد نہیں کیا جاسکتا ن اوراور پی ٹی آئی کے اہم راہنما اور متوقع امیدواروں میں سے کچھ اپنی پنی پارٹیوں کو خیر آباد کہہ کر دوسری پارٹی میں چلے جائیں گئے کیونکہ ن اور پی ٹی آئی میں اس وقت ٹکٹوں اور مقامی قیادت کے حوالے سے خدشات پائے جاتے ہیں اور یہی وجہ پارٹی چھوٹ جانے والوں کیلئے کافی ہو گی اندرون خانہ ایسے لوگوں نے دوسری پارٹی کے قائدین کے ساتھ معاملات طے کر رکھے ہیں اگر وہ اپنی اپنی پارٹیون کے قائدئن سے مطمعن ہو جاتے ہیں تو پھر ضلع کی سیاست کا رخ کچھ اور ہو گا البتہ آمدہ الیکشن میں غیر متوقع رزلٹ آنے کی توقع کی جارہی ہے اور الیکشن کے دوران غیر معمولی ہلچل ہو گی اگلے چند ہفتے انتہائی اہم ہیں ضلع ہری پور کی سیاست کے لئے اگر پارٹیاں تبدیل نہ بھی ہوئی تو اندرون خانہ دھڑے بندی ہو جائے گی ۔