ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل کے مسائل کو حل کرنے کیلئے متعلقہ اداروں کو ضروری ہدایات جاری کر دی گئی ہیں، وزیر مملکت رانا افضل خاں

ہفتہ مئی 23:49

فیصل آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 مئی2018ء) وزیر مملکت برائے خزانہ رانا افضل خاں نے کہا ہے کہ ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل کے مسائل کو حل کرنے کیلئے متعلقہ اداروں کو ضروری ہدایات جاری کر دی گئی ہیں اور اِس سلسلے میں 31مئی سے قبل 35 ارب روپے کے جاری شدہ ریفنڈ کے پیمنٹ آرڈرز کی ادائیگی کر دی جائے گی ، مزید براں کارٹن اور پولیسٹر یارن پر برآمدی ڈیوٹی کی واپسی کے سلسلے میں سوموار کو وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل سے ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل سیکٹر کے نمائندگان ملاقات کریں گے۔

یہ بات وزیر مملکت برائے خزانہ رانا افضل خاں نے وزیر مملکت برائے توانائی چوہدری عابد شیر علی اوروزیر مملکت برائے کامرس و ٹیکسٹائل حاجی اکرم انصاری کے ہمراہ یہاں پاکستان ہوزری مینوفیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسو سی ایشن میں ایک خصوصی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

(جاری ہے)

اِس موقع پر قومی اسمبلی کے ممبر میاں عبدالمنان کے علاوہ چیئرمین پریگمیا اعجاز کھوکھر ، شیخ مختار احمد چیئرمین فیسکو بورڈ، وحید خالق رامے، ڈاکٹر خرم طارق ، محمد امجد خواجہ، کاشف ضیاء ودیگر ایسوسی ایشن کے نمائندگان بھی موجود تھے۔

وزیر مملکت برائے خزانہ رانا محمد افضل خاں نے کہا کہ حکومت بہت جلد نیا ٹیکسٹائل پیکج دے رہی ہے جس کے تحت ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل سیکٹر کو مزید مراعات دی جائیں گی ۔وزیر مملکت برائے ٹیکسٹائل حاجی اکرم انصاری نے کہا کہ M-3انڈسٹریل اسٹیٹ میں 45ایکڑ پر نیا اور جدید ایکسپو سنٹر تعمیر کیا جارہا ہے اور توقع ہے کہ یہ آئندہ دو سال میں مکمل کر لیا جائے گا۔

وزیر مملکت برائے توانائی چوہدری عابد شیر علی نے کہا کہ صنعتوں کو مسلسل اوربِلا تعطل بجلی مہیا کی جارہی ہے جبکہ اِس کی قیمتوں میں کمی کابھی از سرِنوع جائزہ لیا جارہا ہے۔اس سے قبل میاں نعیم احمد ، چیئرمین پاکستان ہوزری مینوفیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسو سی ایشن(نارتھ زون) نے خطبہ استقبالیہ دیتے ہوئے کہا کہ کاٹن اور پولیسٹر یارن کی درآمد پر ڈیوٹی سے ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل کی پیداواری لاگت بڑھ چکی ہے اور یہ صنعتوں کیلئے تباہی کا باعث بن رہا ہے ۔

اُنہوں نے کہا کہ بنگلہ دیش اور بھارت میں ٹیکسٹائل صنعتکاروں کو مراعات دی جارہی ہیں۔ حکومت ہماری اور بھارتی صنعتکاروں کی پیداواری لاگت کا جائزہ لے تو اندازہ ہوجائے گا ہم کس مشکل میں ہیں۔ حکومت پہلے سے عائد شدہ ڈیوٹی کو بھی ختم کرے۔انکا کہنا تھا کہ حکومت ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل سیکٹر کے ساتھ 2سال کا معاہدہ کرے اور سپورٹ فراہم کرے تاکہ تسلسل سے ایکسپورٹ کو بڑھایا جاسکے۔