کرپشن ملک کا سب سے بڑا مسئلہ ہے ، الیکشن جیت کر کرپشن ختم کریں گے، عمران خان

جب کراچی کو چھینک آتی ہے تو پاکستان کو ٹھنڈ لگ جاتی ہے ،ایک شخص 30 سال سے برطانیہ میں ہے اور کہتا ہے مہاجروں کی فکر ہے، ایک پارٹی جس کے رہنماؤں کے اربوں روپے ملک سے باہر ہیں وہ کہتی ہے سندھ کی حالت بہتر کرے گی، کراچی میں جلسہ عام سے خطاب

اتوار مئی 00:00

راچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 مئی2018ء) پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے آئندہ انتخابات کے لیے 10 نکات پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہکرپشن ملک کا سب سے بڑا مسئلہ ہے ، الیکشن میں کامیابی حاصل کرنے کے بعد سب سے پہلے کو کرپشن کو ختم کریں گے اور ملک کا لوٹا ہوا پیسہ واپس لائیں گے۔جب کراچی کو چھینک آتی ہے تو پاکستان کو ٹھنڈ لگ جاتی ہے۔

ایک شخص 30 سال سے برطانیہ میں ہے اور کہتا ہے مہاجروں کی فکر ہے، ایک پارٹی جس کے رہنماؤں کے اربوں روپے ملک سے باہر ہیں وہ کہتی ہے سندھ کی حالت بہتر کرے گی، سندھ میں غریب رو رہا ہے، ان کا کوئی حال نہیں لیکن یہ دبئی میں محلات بنا رہے ہیں۔چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کراچی میں جلسہ عام سے اپنے خطاب میں کراچی کو عظیم شہر بنانے کے لیے 10نکات کا اعلان بھی کیا اور کہا کہ ان نکات پر عمل کرانے کے لیے ہی کراچی سے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔

(جاری ہے)

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ پاکستان کے معاشی حب میں پانی نہیں ہے جس کی دو وجوہات ہیں، ایک تو منصوبہ بندی نہیں ہوئی اور دوسرا یہاں پر مافیا بیٹھے ہوئے ہیں۔۔عمران خان نے کہا کہ جب تک اوپر کی لیڈرشپ کی انہیں پشت پناہی نہ ہو وہ کام ہی نہیں کرسکتے۔انہوں نے کہا کہ کراچی کا انتظام بدلیں گے، میئر کا براہ راست الیکشن کرائیں گے، تحریک انصاف میئر کے لیے ایسا آدمی لائے گی جسے ایڈمنسٹریشن کا تجربہ حاصل ہوگا، اس کے ساتھ پوری ٹیم ہوگئی جو ماہرین پر مشتمل ہوگی، اسے اختیارات دیں گے وہ کراچی کی ذمہ داری لے گا۔

عمران خان کے مطابق آج کراچی کا میئر کہتا ہے کہ اس کے پاس ذمہ داری تو ہے لیکن اختیارات نہیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ 18 ویں ترمیم کے بعد وفاق سے اختیارات صوبوں کو منتقل ہوئے لیکن صوبوں نے بلدیاتی اداروں کو اختیارات نہیں دیے۔۔عمران خان نے کراچی کے لیے اپنے دوسرے پوائنٹ کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ وہ شہر میں نظام تعلیم کو بہتر کریں گے، سرکاری تعلیمی اداروں کا معیار بہتر بنائیں گے تاکہ غریب کے بچوں کو بھی بہترین تعلیم ملے۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ وہ کراچی میں عالمی معیار کی یونیورسٹیاں تعمیر کریں گے۔چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ اقتدار میں ا?نے کے بعد وہ کراچی میں صحت کا نظام بھی بہتر کریں گے اور سرکاری اسپتالوں میں اصلاحات کریں گے۔۔عمران خان نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں سرکاری اسپتالوں میں اصلاحات کیے ہیں اور انہیں عالمی معیار کے مطابق ڈھال رہے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ کراچی کا سب سے بڑا مسئلہ امن و امان کا ہے، الیکشن جیتنے کے بعد کراچی کی پولیس کو ٹھیک کریں گے جس کے بعد یہاں رینجرز کی ضرورت نہیں پڑے گی، پولیس سے ہی کام کروائیں گے۔انہوں نے کہا کہ کراچی میں پولیس ماوررائے عدالت قتل میں ملوث ہے، انہوں نے راؤ انوار کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ بلاول بھٹو یہ بتائیں کہ راؤ انوار نے کس کے کہنے پر 440 افراد کو قتل کیا۔

عمران خان نے کہا کہ کراچی کی پولیس کا غیر سیاسی ہونا بہت ضروری ہے تاکہ راؤ انوار جیسے لوگوں کو سزا ملے۔چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ ’بے بی بلاول کہتا ہے کہ عمران خان کو ووٹ نہ دینا، خیبر پختونخوا میں کسی پر سیاسی مقدمہ نہیں بنایا گیا، بلاول بیٹا ذرا پختونخوا میں چیک کرو کتنے مخالفین کے خلاف ایف آئی آر کٹوائی ہی ‘ عمران خان نے کہا کہ خیبرپختونخوا میں پولیس ہماری نوکر نہیں ،آزاد پولیس ہے ، سیاسی مداخلت نہ ہو تو پولیس بہتر کام کرتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ راؤ انوار اور عابد باکسر جیسے افسران نے بے شمار قتل کیے ہیں اور حکمران ان کی تعریف کر رہے ہوتے ہیں۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ کراچی میں بزنس کے لیے بہترین ماحول قائم کریں گے، پوری دنیا سے سرمایہ کاری لائیں گے۔۔عمران خان نے کہا کہ پی ٹی آئی کے شیڈو وزیر خزانہ اسد عمر اس سلسلے میں بہت کام کررہے ہیں۔۔عمران خان نے کہا کہ کراچی سے بجلی کے بحران کا خاتمہ کرنے کے لیے ایک پلان دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ عوام کو اس سے سروکار نہیں کہ کے الیکٹرک کا کیا مسئلہ ہے، انہیں بجلی چاہیے جو فراہم کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔۔عمران خان نے کہا کہ نوجوان ہمارا اثاثہ ہیں، ان کے لیے نئے کھیلوں کے میدان بنائیں گے۔چیئرمین پی ٹی آئی کے مطابق ماضی میں کراچی نے ہر شعبے میں بہت سے اسٹارز پیدا کیے ہیں لیکن اب یہ سلسلہ رک گیا ہے کیوں کہ اب نوجوانوں کے لیے کھیل کے میدان اور دیگر سہولتیں موجود نہیں ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ الیکشن میں کامیابی کے بعد ماحولیات کی بہتری کے لیے اقدامات کیے جائیں گے، شہروں میں منصوبہ بندی سے درخت اگائیں گے۔چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ کراچی میں گندگی ہے ، درخت کم ہوگئے ہیں ، یہاں پر درخت لگائیں گے۔۔عمران خان نے کہا کہ کراچی کے لیے سرکلر ریلوے بہت ضروری ہے، ہم حکومت میں آکر اس کا پلان دیں گے۔چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ اگر صحیح معنوں میں میٹرو ٹرین کی ضرورت ہے تو وہ کراچی میں ہے۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ کراچی کے لوگ سب سے زیادہ شعور رکھتے ہیں، کراچی وہ شہر تھاجہاں کے لوگ ناانصافی کے خلاف سب سے پہلے کھڑے ہوتے تھے۔چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ ’سارے پاکستان کے لوگ اس شہر میں بستے ہیں، کراچی اوپر جاتا ہے تو پاکستان اوپر جاتا ہے‘۔ انہوں نے کہا کہ ’جب کراچی کو چھینک آتی ہے تو پاکستان کو ٹھنڈ لگ جاتی ہے۔

انہوں نے نوجوانوں کو نصیحت کی کہ وہ بڑی سوچ رکھے اور بڑے خواب دیکھیں۔۔عمران خان نے کہا کہ ’ایک شخص 30 سال سے برطانیہ میں بیٹھا ہے اور کہتا ہے کہ اسے مہاجروں کی فکر ہے، اسے مہاجروں کی فکر کیا ہوگی‘۔چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ ایک پارٹی جس کے رہنماؤں کے اربوں روپے ملک سے باہر ہیں وہ کہتی ہے سندھ کی حالت بہتر کرے گی، سندھ میں پانی نہیں ہے ، بچے بھوک سے مر رہے ہیں، اندرون سندھ دنیا کا سب سے غریب علاقہ بن چکا ہے‘۔

عمران خان نے کہا کہ سندھ میں غریب رو رہا ہے، ان کا کوئی حال نہیں لیکن یہ دبئی میں محلات بنا رہے ہیں۔چیئرمین تحریک انصاف نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ پاکستان کا سب سے بڑا مسئلہ کرپشن ہے، پاکستان میں سب سے پہلے کرپشن ختم کرنی ہے۔انہوں نے کہا کہ چین نے کرپٹ افسران کو سزا دی اور جیل میں ڈالا، دنیا میں سب سے تیزی سے ترقی کرنے والا ملک چین کرپشن پر سزائے موت دیتا ہے۔