محکمہ زراعت اور ریڈیو پاکستان کاشتکاروں ، دھان کی بوائی سے متعلق خصوصی رہنمائی کا پرگرام شروع کریں گے

اتوار مئی 14:20

فیصل آباد۔13 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 مئی2018ء) محکمہ زراعت اور ریڈیو پاکستان اگلے ہفتہ سے کاشتکاروں ، زمینداروں کی رہنمائی کیلئے دھان کی بوائی سے متعلق خصوصی رہنمائی کا عمل شروع کریں گے جبکہ کاشتکاروں کو دھان کی منظور شدہ باسمتی اقسام باسمتی 515،پی ایس 2،شاہین باسمتی ، باسمتی پاک ، سپر باسمتی ، باسمتی 2000اور باسمتی 385 وغیرہ کی زیادہ سے زیادہ کاشت یقینی بنانے کی بھی ہدایت کی گئی ہے۔

محکمہ زراعت کے ذرائع نے بتایا کہ ریڈیو پاکستان لاہور ، فیصل آباد ، سرگودھااور اسلام آباد کے زرعی پروگراموں میں دھان کی منظور شدہ اقسام ، شرح بیج ، زمین ونرسری کی تیاری،طریقہ کاشت ، کھادوں کا استعمال اور جڑی بوٹیوں ونقصان رساں کیڑوں کی تلفی بارے کاشتکاروں کوآگاہی فراہم کی جائے گی۔

(جاری ہے)

انہوں نے بتایا کہ کاشتکار باسمتی اقسام کی پنیری کی کاشت یکم جون سے 20جون تک مکمل کریں اور پنیری کی کاشت سے پہلے بیج کو مناسب پھپھوند کش زہروں سے آلودہ کرلیںنیز دھان کی پنیری کے لیے کدو ،خشک یا راب کاطریقہ استعمال کریں ۔

انہوںنے کہاکہ باسمتی اقسام کا بیج تین پائو سے ایک کلوگرام فی مرلہ کے حساب سے کاشت کیا اور پنیری اگنے پر کھیت سے جڑی بوٹیوں کو نکال دیاجائے ۔انہوںنے کہاکہ کاشتکار دھان کی پنیری کو ٹوکہ اور تنے کی سنڈی جیسے نقصان دہ کیڑوں کے حملہ سے بچانے کے لیے سفارش کردہ زہروں کا سپرے کریں جبکہ دھان کی پنیری کی نرسری کے لیے منتخب کردہ کھیت کی تیاری کے دوران 33فیصد والا زنک سلفیٹ بحساب 30کلوگرام فی ایکڑ ڈالیں اور پنیری کمزور نظر آنے کی صورت میں یوریا کھاد بحساب ایک پائو فی مرلہ استعمال کریں۔انہوںنے کہاکہ جب پنیری کی عمر 30سی40 دن ہو جائے تو اسے کھیت میں منتقل کردیاجائے تاکہ بہترین پیداوار حاصل کرنے میں مدد مل سکے ۔

متعلقہ عنوان :