آئرش کرکٹربوئڈرینکن نے نئی تاریخ رقم کردی

بوئڈ رینکن دومختلف ممالک کی جانب سے کھیل کے تینوں فارمیٹ کھیلنے والے دنیاکے واحد کرکٹر بن گئے

اتوار مئی 18:20

ڈبلن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 مئی2018ء) آئرلینڈکے کرکٹر بوئڈ رینکن دومختلف ممالک کی جانب سے کھیل کے تینوں فارمیٹ کھیلنے والے دنیاکے واحد کرکٹر بن گئے ہیں ۔انہوں نے یہ اعزاز پاکستان کے خلاف آئرلینڈکے اولین ٹیسٹ میچ میں حصہ لے کر سرانجام دیا۔انہوں نے آئرلینڈسے قبل انگلینڈکی نمائندگی کی تھی۔33سالہ بوئڈرینکن نادرن آئرلینڈمیں پیدا ہوئے جنہیں ورلڈکپ 2007 کے دوران خاصی شہرت ملی جن کی عمدہ کارکردگی کی بدولت آئرش ٹیم میگاایونٹ میں پاکستان اور آئرلینڈکو ہرانے میں کامیاب رہی تھی۔

ورلڈکپ2007 میں رینکن نے بارہ وکٹیں حاصل کی تھیں۔اس کے علاوہ وہ ورلڈکپ2011 میں انگلینڈکو ہرانے والی آئرش ٹیم کا بھی حصہ تھے۔2012 میں انگلینڈکی نمائندگی کرنے کا خواب آنکھوں میں سجاتے ہوئے بوئڈرینکن نے آئرلینڈ کیلئے اپنی عدم دستیابی کا اعلان کیاتھا۔

(جاری ہے)

2013 میں بوئڈرینکن کے خواب کی تعبیر ہوئی جب انہیںٹوئنٹی20انٹرنیشنل میچ میں انگلینڈکی نمائندگی کرنے کا اعزاز حاصل ہوگیا جس کے بعد وہ ون ڈے کرکٹ بھی کھیلے ۔

جس کے بعداسی سال وہ آسٹریلیاکے خلاف اشیز سیریزمیں وائٹ واش کی خفت سے دوچارہونے والی انگلش ٹیم کا بھی حصہ بنے۔2015 کے ورلڈکپ کیلئے انگلش اسکواڈ میں جگہ بنانے میں ناکامی کے بعد بوئڈرینکن نے واپس آئرلینڈ جانے کا فیصلہ کیا۔جس کے بعد وہ دوبارہ آئرش ٹیم میں جگہ پانے میں کامیاب رہے۔جب آئرلینڈکرکٹ ٹیم پاکستان کے خلاف ڈبلن کے مقام پر اپنی تاریخ کا اولین ٹیسٹ میچ کھیلنے کیلئے میدان میں اتری تو اس میں صرف بوئڈرینکن ہی واحد کرکٹر تھے جنہیں اس سے قبل بھی ٹیسٹ کرکٹ کھیلنے کا اعزاز حاصل تھا۔

آئرلینڈکو چھوڑکر انگلینڈ جانے کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں بوئڈرینکن کا کہناتھا کہ اگر اس وقت آئرلینڈ کے پاس ٹیسٹ اسٹیٹس ہوتا تو میں کبھی بھی کھیلنے کیلئے انگلینڈ نہ جاتا۔واضح رہے کہ اگرچہ کئی دوسرے بھی ایسے کرکٹرزہیں جنہیں دو مختلف ممالک کی جانب سے کرکٹ کھیلنے کا اعزاز حاصل ہے مگر بویڈ رینکن واحد کرکٹرہے جو کھیل کے تینوں فارمیٹس میں دو ممالک کی نمائندگی کرنے میں کامیاب رہاہے۔

متعلقہ عنوان :