رمضان المبارک کی آمد قبل ہی اشیاء خوردونوش کی قیمتوں کو پر لگ گئے

اتوار مئی 18:50

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 مئی2018ء) رمضان المبارک کی آمد سے قبل اتوار بازاروں اور ڈپارٹمنٹل اسٹورز سے بڑے پیمانے پر خریداری شروع کر دی اور اشیا خور و نوش کی قیمتوں کو بھی پر لگ گئے کوئٹہ میں مرغی کی قیمتوں میں کمی نہ آسکی اور فی کلو چکن کی قیمت 300 روپے برقرار ہے جب کہ بعض علاقوں میں مرغی 320 روپے میں بھی فروخت کی جارہی ہے کوئٹہ میں بکرے کا گوشت 800 روپے فی کلو میں فروخت کیا جا رہا جب کہ اس کی سرکاری قیمت 650 روپے فی کلو مقرر ہے، اسی طرح گائے کے گوشت کی سرکاری قیمت 350 روپے ہے جو 440 روپے فی کلو تک میں فروخت ہورہا ہے شہر میں دود کی سرکاری قیمت فی لیٹر 86 اور دہی فی کلو 95 روپے ہے تاہم ایک لیٹر دودھ 95 سے 100 روپے میں فروخت کیا جارہا ہے جب کہ دہی کی فی کلو قیمت 110 روپے کردی گئی ہے مارکیٹ ذرائع کے مطابق کوئٹہ میں آٹے کے 20 کلو تھیلے کی قیمت میں 20 روپے کا اضافہ کردیا گیا جو 800 روپے میں فروخت ہورہا ہے جب کہ ٹماٹر کی فی کلو قیمت 10 روپے کے اضافے سے 30 سے بڑھ کر 40 روپے فی کلو ہوگئی آلو اور پیاز کی فی کلو قیمت میں 5 روپے کا اضافہ ہوگیا جس کے بعد فی کلو قیمت 20 سے بڑھ کر 25 روپے ہوگئی جب کہ پیاز 25 سے بڑھ کر 30 روپے فی کلو تک پہنچ گئی کوئٹہ میں رمضان المبارک سے قبل اتوار بازاروں میں غیر معمولی رش دیکھنے میں آرہا ہے جہاں اشیا خور و نوش کی قیمتیں کچھ اس طرح ہیں دیسی لیموں 175 روپے کلو، پھول گوبھی 45، بھنڈی 65 اور ٹماٹر 20 روپے فی کلو میں فروخت ہورہے ہیں جب کہ پیاز 20، کریلا 35 اور بینگن کی فی کلو قیمت 27 روپے ہے اتوار بازاروں میں ایرانی کھجور 160 روپے، کیلا 100 روپے درجن، آڑو 140 روپے فی کلو، چھوٹا اور سبز سیب 80 روپے کلو، تربوز 20 روپے، لوکاٹھ 80 روپے کلو اور خربوزہ 20 سے 30 روپے کلو میں دستیاب ہے۔

متعلقہ عنوان :