مریدکے مسلح منشیات فروشوں کی بھرے بازار میں دن دیہاڑے اندھا دھند فائرنگ ،کمسن بچی اور خاتون سمیت پانچ افراد زخمی

اتوار مئی 22:10

مریدکے (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 مئی2018ء) پولیس کو مخبری کے شبہ میں درجن کے قریب جدید ہتھیاروں سے مسلح منشیات فروشوں کی بھرے بازار میں دن دیہاڑے اندھا دھند فائرنگ کمسن بچی اور خاتون سمیت پانچ افراد گولیاں لگنے سے شدید زخمی چار کو تشویشناک حالت میں میو ہسپتال منتقل کردیاگیا ۔ تفصیل کے مطابق گزشتہ روز مریدکے جی ٹی روڈ کی آبادی نذر آباد میں پولیس کو مخبری کرنے کے غصہ میں مسلح منشیات فروشوں نے بھرے بازار اندھا دھند فائرنگ کر کے کمسن بچے جمیل ، خاتون راشدہ علیم ، شہباز اور اکبر علی سندھو کو شدید زخمی کر دیا جبکہ ایک نامعلوم شخص معمولی اور آٹھ راہگیر بھگڈر سے معمولی زخمی ہو گئے ۔

شدید زخمی افراد کو ریسکیو 1122 کے ذریعے فوری طور پر لاہور میو ہسپتال منتقل کر دیا گیا ۔

(جاری ہے)

گولیوں کے شکار افراد نے الزام لگایا کہ پولیس کو ایمرجنسی 15 پر فوری کال کی گئی کہ منشیات فروش اسلحہ لئے پھر رہے ہیں مگر پولیس نہ پہنچی اور ایک منشیات فروش پکڑا گیا جسے پولیس نے چھوڑ دیا منشیار فروشوں کا ۔الزام تھا کہ محلہ والوں نے مخبری کی ہے جس کی وجہ سے فائرنگ کی گئی پولیس اگر بروقت پہنچ جاتی تو یہ واقعہ نہ ہوتا واضح رہے چند روز قبل بھی تار بازار میں پولیس کی غفلت اور لاپرواہی کے باعث پانچ افراد قتل ہو گئے تھے جن کے ملزم پولیس تاحال گرفتار کرنے میں ناکام ہے ۔

مریدکے میں جگہ جگہ منشیات اور جوئے کے اڈے ہیں پولیس انکے خلاف کاروائی نہیں کرتی جو شہری مخبری کرے وہ منشیات اور جوئے والوں کو شکار بن جاتا ہے ۔