حکومت پہلے ہی سرمایہ کاروں اور بر آمد کنندگان کے مطالبات کو پورا کر چکی ہے اور اب یہ ان پر منحصر ہے کہ برآمدات کے حجم کو بڑھائیں‘ حکومت کی طرف سے برآمد کنندگان کیلئے اعلان کردہ 3ماہ کی مراعات کے مثبت نتائج برآمد ہو رہے ہیں‘ حکومت کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات سے ٹیکس نیٹ میں اضافہ ہو گا‘ مسلم لیگ(ن)کے قائد نواز شریف کے وژن کے تحت حکومت نے ملک بھر میں اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبے لگائے‘ ایسا کوئی ہفتہ نہیں جس میں اس نے اربوں روپے مالیت کے منصوبوں کا افتتاح نہ کیا ہو

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا لاہور چیمبر آف کامرس کی اچیومنٹ ایوارڈکی تقریب سے خطاب

اتوار مئی 22:50

لاہور ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 مئی2018ء) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے برآمد کنندگان پر زور دیا ہے کہ پاکستان کی برآمدات میں کم از کم 100 ارب ڈالر تک بڑھائیں کیونکہ عالمی منڈیوں میں مسابقت کیلئے ملک میں بہت زیادہ صلاحیت پائی جاتی ہے‘ حکومت پہلے ہی سرمایہ کاروں اور بر آمد کنندگان کے مطالبات کو پورا کر چکی ہے اور اب یہ ان پر منحصر ہے کہ برآمدات کے حجم کو بڑھائیں۔

انہوں نے یہ بات اتوار کو لاہور چیمبر آف کامرس کی اچیومنٹ ایوارڈکی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت کی طرف سے برآمد کنندگان کیلئے اعلان کردہ 3ماہ کی مراعات کے مثبت نتائج برآمد ہو رہے ہیں اور عندیہ دیا کہ مراعاتی مدت کو 3 سال تک بڑھایا جا سکتا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ حکومت نے تاجر برداری اور سرمایہ کاروں سے کئے گئے تمام وعدے پورے کئے ہیں اور ان کے مطالبات کو پورا کیا ہے اور اب ان پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ آگے بڑھ کر اپنا کردار ادا کریں اور برآمدات کو 40 ارب ڈالر سے 100 ارب ڈالر تک لے کر جائیں۔

(جاری ہے)

انھوں نے برآمد کنندگان کے وفود پر زور دیا کہ وہ حکومت کو ملکی برآمدات میں اضافہ کیلئے اقدامات تجویز کریں۔وزیر اعظم نے چیمبرز اور برآمدکنندگان کی ایسوسی ایشنوں پر زور دیا کہ برآمدات کے حجم میں اضافہ کے لئے حکومتی اقدامات سے اسی بھرپور انداز میں استفادہ کریں۔انہوں نے انکم ٹیکس کی سلیبس میں کمی کا حوالہ دیتے ہوئے اجتماع پر زور دیا کہ ملک کے مفاد کے لئے اس سے استفادہ کریں۔

وزیر اعظم نے اس توقع کا بھی اظہار کیا کہ حکومت کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات سے ٹیکس نیٹ میں اضافہ ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن جولائی میں ہوں گے اور عوام سیاسی جماعتوں کی قسمت کا فیصلہ کریں گے۔اس فیصلہ کے نتیجہ میں ایک نئی حکومت قائم ہوگی جس کے پاس اپنی آئینی مدت کے لئے کام کرنے کا مینڈیٹ ہوگا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ(ن)کے قائد نواز شریف کے وژن کے تحت حکومت نے ملک بھر میں اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبے لگائے۔

انہوں نے کہا ایسا کوئی ہفتہ نہیں جس میں اس نے اربوں روپے مالیت کے منصوبوں کا افتتاح نہ کیا ہو۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) نے صرف ملک اور قوم کے لئے کام کیا اور ہماری حکومت نے نہ صرف نئے منصوبے شروع اور مکمل کئے بلکہ ماضی کی حکومتوں کے ادھورے منصوبے بھی مکمل کرائے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے پانچ برسوں میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا جس کی ملک کی 65سالہ تاریخ میں مثال نہیں ملتی۔

وزیر اعظم نے کہا کہ ملک جمہوری نظام کے تسلسل سے ہی ترقی کر سکے گا۔جو بھی حکومت آئے پالیسیوں کا تسلسل جاری رہنا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے توانائی کے منصوبے مکمل کرائے اورموٹر ویز کے طول میں 1700 کلومیٹر کا اضافہ کیا۔انہوں نے کہا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری(((سی پیک)) سے بھی کاروبار اور سرمایہ کاری میں بے پناہ اضافہ ہوگا اور بر آمدکنندگان پر زور دیا کہ وہ اقتصادی زونز سے استفادہ کریں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ آئندہ حکومت کا استحقاق ہے کہ وہ پاکستان مسلم لیگ(ن) کے پیش کردہ بجٹ میں چاہیں تو ترمیم کر لیں۔انہوں نے کہا کہ تاہم پاکستان مسلم لیگ(ن) ہی آئندہ حکومت بنائے گی۔ وزیراعظم نے کہا کہ ملکی شہری ہونے کے ناطے ہم پر ٹیکس ادا کرنا قانونی ذمہ داری ہے۔۔ٹیکنالوجی کو بروئے کار لاتے ہوئے ٹیکس چوروں کی نشاندہی کی جائے گی۔