سعودی عرب میں روبوٹ ٹکنالوجی کی مدد سے گھٹنے کے جوڑ کی تبدیلی

روبوٹک ٹکنالوجی کا نظام جدید کمپیوٹر پروگرام کے ذریعے ڈاکٹر کی معاونت کرتا ہے، ڈاکٹر الدخیل

پیر مئی 11:50

ریاض(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) سعودی عرب میں روبوٹ کے مدد سے گھٹنے کا جوڑ تبدیل کرنے اور ہڈی کے کھردرے پن کے علاج کے ساتھ ہی طبّی کامیابیوں کے میدان میں ایک سنگ میل عبور کر لیا گیا ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق جدہ میں کنگ عبدالعزیز میڈیکل سٹی میں ہڈیوں اور جوڑوں کے آپریشن کے شعبے کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر محمد الدخیل کے مطابق روبوٹ ٹکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے گھٹنے کے جوڑ کی تبدیلی کے 3 کیسز مکمل کر لیے گئے اور یہ تمام کامیاب رہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے بتایا کہ جدی ترین ٹکنالوجی پر مبنی یہ نظام سرجن کے ہاتھوں کی مہارت کے ساتھ بیک وقت کام کرتا ہے تا کہ ٹرانسپلانٹ کیے گئے گٴْھٹنے کو درستی کے ساتھ صحیح جگہ پر نصب کیا جا سکے۔ ڈاکٹر الدخیل کا کہنا تھا کہ روبوٹک ٹکنالوجی کا نظام جدید کمپیوٹر پروگرام کے ذریعے ڈاکٹر کی معاونت کرتا ہے۔ اس طرح باریک بینی کے ساتھ جائزہ لے کر حاصل ہونے والی معلومات کی بنیاد پر مریض کے گھٹنے کو اعلی ترین معیار کے مطابق ٹرانسپلانٹ کیا جاتا ہے۔انہوں نے باور کرایا کہ ہڈیوں کا کھردرا پن گھٹنے کے اندر جوڑوں کی باہمی رگڑ کے نتیجے میں سامنے آتا ہے۔ اس کے نتیجے میں ہڈیوں کے دیگر حصوں میں بھی شدید تکلیف محسوس ہوتی ہے۔