پاکستانی نژاد اطالوی خاتون ثنا چیمہ کے قتل کے دو ملزمان کی فرار کی کوشش

پولیس نے دونوں ملزمان کو نیو ائیر پورٹ سے گرفتار کر لیا

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین پیر مئی 12:01

پاکستانی نژاد اطالوی خاتون ثنا چیمہ کے قتل کے دو ملزمان کی فرار کی کوشش
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 14 مئی 2018ء) : پاکستانی نژاد اطالوی خاتون ثنا چیمہ کے قتل میں ملوث دو ملزمان نے آج صبح نیو ائیر پورٹ سے ملک سے فرار ہونے کی کوشش کی لیکن ان کی کوشش کو ناکام بنا دیا گیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ثنا قتل کیس کے دو ملزمان کو نیو ائیر پورٹ سے گرفتار کر لیا گیا ہے۔ ایف آئی اے نے ثنا قتل کیس میں گرفتار دونوں ملزمان کو حراست میں لے لیا۔

دونوں ملزمان نجی پرواز ٹی کے 711 سے استنبول جانا چاہتےتھے۔ ایف آئی اے کے مطابق اعجاز خضر اور فراز خضر استنبول فرار ہونے کی کوشش کر رہے تھے لیکن ان کے فرار ہونے کی کوشش کو ناکام بنا کر انہیں حراست میں لے لیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ پنجاب فرانزک لیبارٹری کی رپورٹ میں اطالوی نژاد شہری ثناء چیمہ کو گلہ دبا کر قتل کرنے کی تصدیق کی جا چکی ہے ۔

(جاری ہے)

اطالوی شہریت کی حامل ثناء چیمہ کی فرانزک رپورٹ کے مطابق گجرات کے نواحی گاؤں منگووال میں مبینہ طور پر رشتے داروں کے ہاتھوں غیرت کے نام پر قتل ہونے والی پاکستانی نژاد اطالوی لڑکی ثناء چیمہ کی موت حادثاتی نہیں تھی بلکہ ثناء چیمہ کو قتل کیا گیا ہے۔ پنجاب فرانزک لیبارٹری نے اطالوی نژاد شہری ثناء چیمہ کو گلہ دبا کر قتل کرنے کی تصدیق کردی ۔

ذرائع کے مطابق فرانزک رپورٹ سے یہ بات سامنے آئی کہ ثناء چیمہ کی گردن کی ہڈی ٹوٹی ہوئی تھی۔ پولیس نے فرانزک رپورٹ آنے کے بعد ثناء چیمہ کے والد، بھائی اور چچا کو قتل کے الزام میں گرفتار کرلیا ۔واضح رہے کہ 19 اپریل کو ثناء چیمہ واپس اٹلی جارہی تھی تاہم 18 اپریل کو ہی انہیں غیرت کے نام پر قتل کردیا گیا۔ ثنا کسی اور سے شادی کرنے کی خواہشمند تھی جبکہ ان کے اہل خانہ ان کی شادی خاندان کے ایک لڑکے سے کروانا چاہتے تھے۔ ثنا نے انکار کرتے ہوئے اٹلی واپس جانے کا فیصلہ کیا لیکن ثنا چیمہ کو ان کی روانگی سے قبل ہی قتل کر دیا گیا۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

متعلقہ عنوان :