ممبئی حملہ بھارتی خفیہ ایجنسی ”را“ کا اسٹنگ آپریشن تھا-رحمان ملک

اقوام متحدہ نے وضاحت مانگ لی تو کیا جواب دیں گے؟ ڈیوڈ ہیڈلے کے سینڈیکیٹ کو بھارت کی خفیہ ایجنسی نے تیار کیا-صحافیوں سے گفتگو

Mian Nadeem میاں محمد ندیم پیر مئی 12:55

ممبئی حملہ بھارتی خفیہ ایجنسی ”را“ کا اسٹنگ آپریشن تھا-رحمان ملک
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔14 مئی۔2018ء) سابق وزیر داخلہ اور پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر راہنما رحمان ملک نے ممبئی حملہ کیس کے مرکزی مجرم اجمل قصاب کے حوالے سے کہا ہے کہ وہ بھارت کا اپنا مہرہ تھا اس لیے ان تک پاکستان کو رسائی نہیں دی گئی۔وفاقی دارالحکومت میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے سابق وزیرِ داخلہ رحمان ملک نے کہا کہ بھارت اپنے ریاستی عناصر بھیج کر پاکستان میں دہشت گردی کرواتا رہا ہے‘ ممبئی حملہ مکمل طور پر بھارتی خفیہ ایجنسی ”را“ نے کروایا، یہ را کا اسٹنگ آپریشن تھا۔

سابق وزیر داخلہ نے انکشاف کیا کہ میں نے اس وقت کے بھارتی ہم منصب سے کہا تھا کہ ممبئی حملہ کیس کے حوالے سے ثبوت دیں میں دہشت گردوں کے خلاف کارروائی کروں گا۔

(جاری ہے)

رحمان ملک نے کہاکہ انہوں نے ممبئی حملہ کیس کی تحقیقات کرنے کے لیے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) تشکیل دی تھی۔ اپنی پریس کانفرنس کے آغاز میں انہوں نے وضاحت پیش کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان کی پریس کانفرنس میں کوئی الزام تراشی نہیں ہوگی اور نہ ہی یہ کسی کے خلاف ہوگی۔

سابق وزیرداخلہ نے کہا کہ سابق وزیرِاعظم نواز شریف قوم پر رحم کریں گے اور اپنا بیان واپس لیں گے، اور میں امید کرتا ہوں کہ نواز شریف اپنے بیان کو واپس لے کر وضاحت پیش کریں گے۔غیر ریاستی عناصر کی بات کرتے ہوئے رحمان ملک نے کہا کہ نان اسٹیٹ ایکٹرز وہ ہوتے ہیں جن کو حکومت کی پشت پناہی نہیں ہوتی۔۔رحمان ملک نے کہا کہ بھارت اپنے ریاستی عناصر بھیج کر پاکستان میں دہشت گردی کراتا رہا ہے، نوازشریف کے بیان پر اقوام متحدہ نے وضاحت طلب کرلی تو وہ کیا کہیں گے؟ رحمان ملک نے کہا کہ ڈیوڈ ہیڈلے کے سینڈیکیٹ کو بھارت کی خفیہ ایجنسی نے تیار کیا، اجمل قصاب کا بیان ریکارڈ کرانے کی اجازت نہیں دی گئی،اجمل قصاب بھی بھارت کا اپنا مہرہ تھا،اس لیے اس تک رسائی نہیں دی گئی۔

سابق وزیر داخلہ نے کہا کہ ممبئی حملہ کیس کی سماعت بھارت کے عدم تعاون کی وجہ سے رکی، بھارتی پولیس کے افسر نے گواہی دی کہ سانحہ سمجھوتہ ایکسپریس را کی کارروائی تھی۔انہوں نے مزید کہا کہ ممبئی حملے کی ساری کارروائی بھارت نے خود تیارکرائی، ممبئی حملے کی تیاری کے وقت بھارت سو نہیں رہا تھا، خود یہ معاملہ چلا رہا تھا۔۔رحمان ملک نے کہا کہ میاں صاحب سے اپیل ہے کہ قوم پر رحم کریں، بیان پورا واپس لے لیں، میاں صاحب نے بہت صبر کے بعد آج کلبھوشن کے خلاف بیان دیا۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ امید ہے کہ میاں صاحب اس پر غور کریں گے اور بیان واپس لیں گے، میاں صاحب اگر آپ نے تین سال بعد غلطی ماننی ہے تو آج ہی بیان واپس لے لیں۔دوسری جانب نوازشریف کےخلاف مقدمے کے اندراج کیلئے ایک اور درخواست سی پی اوفیصل آباد کو درخواست دی گئی ہے،درخواست تحریک انصاف کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل فرخ حبیب نے دی۔فرخ حبیب کی درخواست کے متن میں کہا گیا ہے کہ نوازشریف نے اپنے حلف اورملک سے غداری کی،انہوں نے تین مرتبہ ملکی سالمیت کے محافظ کاحلف اٹھایا لیکن اس کی پاسداری نہیں کی۔

ممبئی حملہ سے متعلق پاکستان کےخلاف نوازشریف کابیان جھوٹ پرمبنی ہے،بیان سے مجھ سمیت کروڑوں پاکستانیوں کے جذبات مجروح ہوئے،،نوازشریف کےخلاف آئین سے غداری کامقدمہ درج کیاجائے،ان کیخلاف ملکی سالمیت کیلئے خطرہ پیداکرنے کامقدمہ درج کیاجائے۔