رواں مالی سال چاول کی برآمدات2 ارب ڈالر تک بڑھنے کی توقع

دنیا بھر میں بھارتی چاول کی مانگ میں نمایاں کمی ، محکمہ زراعت نے کسانوں میں زرعی زہروں کے استعمال کے حوالے سے شعوری مہم شروع کر دی

پیر مئی 15:40

لاہور۔14 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) دنیا بھر میں بھارتی چاول کی مانگ میں کمی کے بعد پاکستانی چاول کی برآمدات میں غیر معمولی اضافہ متوقع ہے ، محکمہ زراعت نے کسانوں میں زرعی زہروں کے استعمال کے حوالے سے شعوری مہم شروع کر دی ہے ، دنیا بھر کی چاول درآمد کرنے والی کمپنیوں نے محکمہ زراعت کے اس اقدام کی تحسین کی ہے، چاول ایک اہم نقد آور فصل ہے، یہ فصل ہماری غذائی ضروریات پوری کرنے کے ساتھ برآمدات کے ذریعے زرمبادلہ کمانے میں بھی اہم کردار ادا کرتی ہے، پاکستانی باسمتی چاول اپنی خوشبو اور کوالٹی کی وجہ سے پوری دنیا میں پسند کیا جاتا ہے، پاکستان دنیا میں چاول برآمد کرنے والے ممالک میں اہم مقام رکھتا ہے، پھپھوند کش زرعی ادویات ٹرائی سائیکلازول، کاربینڈازم اور تھائیوفینیٹ میتھائل کو ترک کرکے پاکستانی چاول کی مانگ میں اضافہ ہو سکتا ہے، دنیا بھر میں پیدا ہونے والے چاول پر زہریلی ادویات کا استعمال کم سے کم کیا جا رہا ہے، اس لئے اب پاکستان میں بھی اس حکمت عملی پر کام شروع ہوگیا ہے، رائس ایکسپوٹر ایسوسی ایشن کے مطابق رواں سال چاول کی برآمدات 2 ارب ڈالرتک بڑھنے کی توقع ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستانی برآمد کنندگان چاول کی برآمدات میں اضافہ کیلئے نئی اور غیر روایتی منڈیوں تک رسائی تک خصوصی توجہ دے رہے ہیں، رائس ایکسپورٹر ایسوسی ایشن کے سنئیر وائس چیئرمین کے مطابق رواں مالی سال 2017-18 کے دوران 2.29 ملین ٹن چاول برآمد کئے گئے جس سی1.06 ارب ڈالر زرمبادلہ کمایا گیا، انہوں نے مزید کہا کہ رواں مالی سال نئی منڈیوں تک رسائی ملنے سے برآمدات میں اضافہ ہوگا

(جاری ہے)