صوبہ بھر کے پرائیویٹ بریڈنگ فارمز کی درجہ بندی کی جائے گی‘خالد عیاض خان

تمام افسران اپنے متعلقہ اضلاع اور ریجنز میں موجود بریڈنگ فارمز کا خود وزٹ کر کے ان کی تعداد رپورٹ کریں بریڈنگ فارمز میں موجود جانوروں کی اقسام، تعداد اور مختص اراضی کے مطابق اے ، بی اور سی سطح پر درجہ بندی کی جائے گی درجہ بندی سے ان میںمقابلے کا رجحان پیدا ہو گا، جنگلی حیات کے تحفظ و افزائش میں بہتری آئے گی‘ڈائریکٹر جنرل وائلڈلائف اینڈ پارکس پنجاب

پیر مئی 16:28

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) ڈائریکٹر جنرل وائلڈلائف اینڈ پارکس پنجاب خالد عیاض خان نے کہا ہے کہ صوبہ بھر کے پرائیویٹ بریڈنگ فارمز کی درجہ بندی کااصولی فیصلہ کر لیا گیا ہے اور اس ضمن میں تمام ضلعی و ریجنل افسران کو اپنے متعلقہ علاقوں میں موجود فارمز کا ذاتی طور پردورہ کرنے اور وہاں موجود جانوروں کی تعداد، اقسام اور ان کے لئے مختص کی گئی اراضی کی تفصیلات رپورٹ کرنے کی ہدائت کر دی گئی ہے۔

انہوں نے یہ بات بیدیاں روڈ پر بریڈنگ فارمز کے دورہ کے دوران کہی۔ اس موقع پر ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف ہیڈ کوارٹرز محمد نعیم بھٹی، ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف سفاری زو چوہدری شفقت علی، ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف لاہور ریجن سید ظفرالحسن، ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف پبلسٹی عامر مسعود، ڈائریکٹر لاہور چڑیا گھر حسن علی سکھیرا ،پراجیکٹ ڈائریکٹر گرین پاکستان پروگرام میاں حفیظ احمداور اعزازی گیم وارڈن پنجاب شاہ رخ بٹ بھی ان کے ہمراہ تھے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ تمام فیلڈ افسران کی طرف سے بریڈنگ فارمز بارے حاصل ہونے والی رپورٹس کا تفصیلی جائزہ لے کر ان کی اے، بی اور سی کی سطح پر درجہ بندی کر دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ تمام بریڈنگ فارمزدرجہ بندی کے مطابق جانور اور پرندے رکھنے کے مجاز ہوں گے اور انہیں افزائش کردہ اور فروخت کردہ جانوروں کی تفصیلات ہر تین ماہ بعداپنے متعلقہ وائلڈ لائف افسر کے دفتر جمع کروانی ہوں گی۔

خالد عیاض خان نے کہا کہ پرائیویٹ بریڈنگ فارمز کی درجہ بندی سے ان میں مقابلے کا رجحان پیدا ہو گا جس سے جنگلی حیات کے تحفظ و افزائش میں بہتری آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ بریڈنگ فارم مالکان جانوروں کے لئے مختص رقبہ اور تعداد میں اضافہ کر کے محکمہ کے افسران سے انسپکشن کروا کر بریڈنگ فارم کی درجہ بندی کو تبدیل کروا سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بریڈنگ فارمز کی درجہ بندی سے یہاں موجود جانوروں کے درست اعداد و شمار کا حصول ممکن ہو گا ۔

متعلقہ عنوان :