نوازشریف کا بیان دشمن ملک کو خوش کرنے کیلئے دیا گیا،شاہ محمودقریشی

بھارت میں اس بیان کے بعد شادیانے بجائے جارہے ہیں، مسلم لیگ (ن) کے وزراء سابق وزیر اعظم کے ساتھ ہیں ، موجودہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے نیشنل سیکیورٹی کونسل کے اجلاس میں نوازشریف کے بیان کی نفی کی ہے،خصوصی گفتگو

پیر مئی 22:30

نوازشریف کا بیان دشمن ملک کو خوش کرنے کیلئے دیا گیا،شاہ محمودقریشی
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) سابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ سابق وزیر اعظم نوازشریف کا حالیہ بیان دشمن ملک بھارت کو خوش کرنے کیلئے دیا گیا۔ بھارت میں اس بیان کے بعد شادیانے بجائے جارہے ہیں، مسلم لیگ (ن) کے وزراء سابق وزیر اعظم کے ساتھ ہیں جبکہ موجودہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے نیشنل سیکیورٹی کونسل کے اجلاس میں نوازشریف کے بیان کی نفی کی ہے۔

آن لائن سے گفتگوکرتے ہوئے سابق وزیر خارجہ اور پاکستان تحریک انصاف کے راہنما ء شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ حکومتی پارٹی کے موجودہ صدر شہباز شریف نے بھی اس بیان سے لاتعلقی کا اظہارکیا ہے اور اب اس بیان کے بارے میں وضاحت پیش کرچکے ہیں۔ چوہدری نثار علی خان نے بھی اس معاملے میں وضاحت پیش کی ہے۔

(جاری ہے)

مسلم لیگ (ن) کو واضع کرنا ہوگا کہ بطور جماعت کا موقف کیا ہے کیونکہ نیشنل سیکیورٹی کے اہم ترین وزراء سابق وزیر اعظم نواز شریف کے ساتھ ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے مطالبہ کیا کہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی پارلیمنٹ میں اپنا موقف پیش کریں ۔ سابق وزیر اعظم نوازشریف کے بیان سے بھار ت میں شادیانے بجائے جارہے ہیں اور یہ بیان دشمن ملک کو خوش کرنے کیلئے جاری کیا گیا ہے۔ جس پر پوری قوم میں غم وغصہ پایا جاتا ہے۔انہوںنے اس بات کو دہرایا کہ یہ ایک باقاعدہ منصوبہ بندی کے تحت جاری کیا گیا ۔

کیونکہ حکومت نے ایک صحافی کو ملتان ائرپورٹ پر سہولت مہیاکی اور اب حکومت اس سے انکار بھی کررہی ہے۔اس بیان کے جاری کرنے سے بین الاقوامی برادری پاکستان کے خلاف پراپیگنڈ ہ کرسکتی ہے۔لہذا ہمیں اس معاملے کو بغور دیکھنا ہوگا ۔ قومی سلامتی ہماری پہلی ترجیح ہے۔انہوںنے مطالبہ کیا کہ نوازشریف کو فوری طور پر اس بیان کو واپس لینا چاہیے اور قوم سے معافی مانگنی چاہیے۔

بین الاقوامی امور کی ماہر اور تھنک ٹینک کی سربراہ ڈاکٹر شیرین مزاری کا کہنا ہے کہ پاکستان پہلے ہی ایف اے ٹی ایف میں گرے لسٹ میں شامل ہے اور نوازشریف کے اس بیان کی وجہ سے بلیک لسٹ میں شامل ہوسکتے ہیں ۔ اس بیان سے پاکستان کو بلیک لسٹ میں شامل کرنے کیلئے یورپی یونین کی تنظیم ( ایف، اے ، ٹی ، ایف) کو تقویت ملے گی۔ اس بیان سے پاکستان کو بین الاقوامی سطح پر بہت سے نقصان کا سامنا ہوسکتا ہے۔۔نوازشریف کے اس بیان کو قوم نے مسترد کردیا ہے۔