انتہائی اہم نوعیت کی تقرریوں کے بارے میں رعایت دی جا سکتی ہے ،الیکشن کمیشن

پیر مئی 22:30

انتہائی اہم نوعیت کی تقرریوں کے بارے میں رعایت دی جا سکتی ہے ،الیکشن ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) الیکشن کمیشن آف پاکستان نے واضح کیا ہے کہ اگلے عام انتخابات کے شفاف انعقاد یکم اپریل 2018کے بعد سے نئے ترقیاتی سکیموں کے اجراء اور سرکاری اداروں میں تقرریوں پر مکمل پابندی عائد کی گئی ہے تاہم انتہائی اہم نوعیت کی تقرریوں کے بارے میں رعایت دی جا سکتی ہے ۔۔الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامئے کے مطابق کمیشن کی طرف سے جاری کردہ نوٹیفکیشن 11 اپریل 2018 جس کے تحت سرکاری اداروں میں بھرتیوں پر پابندی یکم اپریل 2018 کے بعد سے پابندی عائد کی گئی تھی نیز ایسے نئے سرکاری ترقیاتی منصوبوں کو شروع کرنے پر بھی پابندی عائد کی گئی تھی جن کی منطوری یکم اپریل یا اس کے بعد ہوئی تھی الیکشن کمیشن کے اس نوٹیفکیشن کو مورخہ 10 مئی 2018 کو اسلام آباد ہائی کورٹ نے کالعدم قرار دے دیا تھا تا ہم الیکشن کمیشن نے اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ آف پاکستان میں چیلنج کیا جس کے نتیجے کے طور پر سپریم کورٹ آف پاکستان نے اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کرنے کا حکم دیا ہے اور اس طرح سے الیکشن کمیشن آف پاکستان کا نوٹیفکیشن بحال ہو گیا ہے۔

(جاری ہے)

اس ضمن میں اس بات کو باور کروایاجاتا ہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان کی یکم اپریل 2018کے بعد نئے ترقیاتی کاموں کی سکیموں کے اجرائ پر لگائی گئی پابندی تا حکم ثانی برقرار رہے گی۔ تا ہم انتہائی اہم نوعیت کے تقرریوں کے حوالے سے ادارے پابندی کے حوالے سے رعایت کی درخواستیں الیکشن کمیشن کو دے سکتے ہیں مزید برآں ڈاکٹرز کی تعیناتی کے حوالے سے کسی قسم کی پابندی عائد نہیں کی گئی ہے۔۔۔اعجاز خان