اسپیشل افراد کو کارآمد شہری بنانے کے لئے ریاست اپنا کردار ادا کرے،چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ

پیر مئی 21:20

لاہور۔14 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس محمد یاور علی نے کہاہے کہ اسپیشل افراد کو کارآمد شہری بنانے کے لئے ریاست اپنا کردار ادا کرے، وہ سوموار کولاہور میں پنجاب بار کونسل میں معذور افراد سے متعلق قانونی اصلاحات کے موضوع پر منعقدہ سیمینار سے بطور مہمان خصوصی خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ آئین کا آرٹیکل تین تمام شہریوں کے حقوق کا تحفظ کرتا ہے ہمارا مذہب معذور افراد کو بڑے حقوق دیتا تھا اسی کو مد نظر رکھتے ہوئے تاریخ میں پہلی مرتبہ میرٹ پر آنے والے نابینا وکیل کو سول جج مقرر کیا گیا۔

(جاری ہے)

چیف جسٹس کا مزید کہنا تھا کہ سپیشل افراد کو کارآمد شہری بنانے کے لئے ریاست اپنا کردار ادا کرے ہائی کورٹ مفاد عامہ کے تحت دائر درخواستوں پر اپنے فیصلے قانون کے مطابق سناتی ہے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے لاہور ہائی کورٹ کے سینئر ترین جج جسٹس انوار الحق نے کہا کہ سپیشل افراد سے متعلق قوانین موجود ہیں عدالتیں قانون کے مطابق انصاف فراہمُ کرتیں ہیں ان کا مزید کہنا تھا کہ سڑکوں پر نکلنے کے بجائے اسپیشل افراد کو اپنی مدد آپ کے تحت کام کرنا ہوگا ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج لاہور عابد حسین قریشی نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ معذور افراد کو معاشرہ اچھا نہیں سمجھتا ، معذور بچے اپنے والدین کو ہی اچھے لگتے ہیں،ہم معذور شخص کو پھانسی نہیں دیتے ہیں، معذور افراد کو نوکریوں میں کوٹہ دینا چاہیے،تقریب کے اختتام پر چیف جسٹس محمد یاور علی نے شرکا میں سرٹیفیکیٹس تقسیم کئے تقریب میں چیئر پرسن پنجاب بار کونسل سمیت دیگر عہدیداران نے بھی شرکتِ کی۔