مالی سال2018-19میں امن و امان کیلئے غیر ترقیاتی بجٹ میں 34ارب روپے مختص کئے گئے ہیں،مشیر خزانہ ڈاکٹر رقیہ سعید ہاشمی

پیر مئی 22:04

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) وزیراعلیٰ بلوچستان کی مشیر برائے خزانہ کیپٹن (ر) ڈاکٹر رقیہ سعیدہاشمی نے بلوچستان کا مالی سال 2018-19ء کا بجٹ ایوان میں پیش کرتے ہوئے کہا کہ امن و امان قائم کرنا ریاست کی بنیادی اور آئینی ذمہ داری ہے ہماری صوبائی حکومت اپنے قانون نافذ کرنے والے اداروں کی بھر پور حوصلہ افزائی و معاونت کررہی ہے اس حوالے سے یو این ڈی پی کے تعاون سے پانچ سالہ منصوبہ پر کام جاری ہے جن میں عدلیہ ،انتظامیہ ،پولیس ،ْلیویزپروسیکویشن اور محکمہ جیل خانہ جات کے تمام شعبوں میں بہتری لانے کیلئے ایک مربوط پانچ سالہ نظام پر کام ہورہا ہے امن و امان قائم رکھنے میں افواج پاکستان ،پولیس ،لیویز اورایف سی کا کردار قابل تحسین ہے قانون نافذ کرنے والے اداروں اورفورسز کو جدید خطوط پر استوار کرنے کے علاوہ دیگر اقدامات بھی اٹھائے جارہے ہیں تاکہ صوبے کا مثالی امن و بھائی چارے کی فضاء دوبارہ بحال کی جاسکے ہمارے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے باہمت و جرات مند اہلکار نہایت حوصلے اورجواں مردی سے امن وا مان کو برقرا ررکھنے کیلئے اپنی ذمہ داریاں احسن طریقے سے نبھا ر ہے ہیں ان حالات میںہماری فورسز کے مورال کو بلند رکھنا اورانکے خاندانوں کو مناسب دیکھ بھال کرنا انتہائی ضروری ہے اس سلسلے میں ایک مربوط پالیسی کے تحت شہادت پانے والے اہلکاروں کے پسماندگان کو نقد مالی معاونت پوری تنخواہ ،صحت ،تعلیم اور رہائش کی سہولتیں بھی مہیا کی جارہی ہیں۔

(جاری ہے)

اس میں کوئی شک نہیں کہ ہماری حکومت کے سنجیدہ اقدامات کے نتیجے میں امن وامان میں نمایاں بہتری آئی ہے مگرشرپسند عناصر کی سرگرمیاں ابھی تک مکمل طور پرختم نہیں ہوسکیں جن کی وجہ سے کبھی کبھار وقوع پذیر ہونے والے واقعات حکومت کی کوششوں کو ناکام کرنے کی سازش ہوتی ہے ان واقعات پر حکومتی سطح پر قابو پانے کیلئے بھر پور اقدامات کئے جارہے ہیںآنے والے مالی سال2018-19میں امن و امان کیلئے غیر ترقیاتی بجٹ میں 34ارب روپے مختص کئے گئے ہیں جو موجودہ مالی سال کے مقابلے میں تقریباً10فیصد زیادہ ہیں۔

لیویز اور پولیس کی کارکردگی کو مزید بہتر بنانے کیلئے پاک آرمی سے پیشہ وارانہ تربیت دی جارہی ہے میرٹ پر پولیس افسران کی تقرریاں اور ترقیاں ،پولیس میں سیاسی عدم مداخلت اور انٹیلی جنس فیوژن سیل کی مزید بہتر کارکردگی ہماری ترجیحات میں شامل ہے قانون نافذ کرنے والے اداروں کی موجودہ حالات اورچیلنجز سے نمٹنے کیلئے جدید خطوط پرمنظم کیا جارہا ہے اس سلسلے میں 2ارب روپے کی خطیر رقم سے جدید معیاری اسلحہ اوردیگر ضروری آلات فراہم کرنے کا بندوبست کیا جارہا ہے اسکے علاوہ پولیس اور لیویز میں خصوصی انسداد دہشت گردی فورس کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے جو اپنے اضلاع میں دہشت گردی کے خلاف موثر کردارادا کرسکیں گے قانونان نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں کی تر بیت کیلئے 4کروڑ روپے فراہم کئے جائیں گے ہزاروں بے روزگار و اہل نوجوانوں کو بلوچستان لیویز فورس میں میرٹ کی بنیاد پر بھرتی کردیا گیا ہے کوئٹہ سیف سٹی اور گوادرسیف سٹی منصوبے حکومت بلوچستان کی کاوشوں کا نتیجہ ہے جن پر تیزی سے کام جاری ہے سی پیک روٹ اور منصوبوں کی حفاظت کیلئے اسپیشل پروٹیکشن یونٹ کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے جس کے تحت ہزاروں بے روزگار نوجوانوں کو لیویز اور پولیس فورس میں بھرتی کیا جائے گا۔