مالی سال2018-19میں محکمہ کالجز کے لئے غیر ترًقیاتی مد میں تقریباً 8.5ارب روپے رکھے گئے ، رقیہ سعید ہاشمی

پیر مئی 21:56

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) وزیراعلیٰ بلوچستان کی مشیر برائے خزانہ کیپٹن (ر) ڈاکٹر رقیہ سعیدہاشمی نے بلوچستان کا مالی سال 2018-19ء کا بجٹ ایوان میں پیش کرتے ہوئے کہا کہصوبے میں اعلیٰ تعلیم کے فروغ کیلئے تربت یونیورسٹی اور لورالائی یونیورسٹی کا قیام عمل میں لایاگیا ہے جبکہ جامعہ بلوچستان سردار بہادر خان وویمن یونیورسٹی ،بیوٹمز کے سب کیمپس تمام اضلاع میں مرحلہ وار قائم کئے جارہے ہیں اسکے علاوہ تربت یونیورسٹی کا سب کیمپس گوادر میں قائم کردیاگیا ہے آنے والے مالی سال2018-19میں محکمہ کالجز کے لئے غیر ترًقیاتی مد میں تقریباً 8.5ارب روپے رکھے گئے ہیں جو موجودہ مالی سال کے مقابلے میں 10فیصد زیادہ ہیں صوبے میں اسوقت چھ کیڈٹ کالجز قائم ہیں جن میں کیڈت کالج مستونگ، پشین ،جعفرآباد ، قلعہ سیف اللہ ، پنجگواور کوہلو شامل ہیں ان کالجز میں تعلیمی سرگرمیاں جاری ہیں جبکہ کیڈٹ کالج نوشکی اور قلعہ عبداللہ میں رواں تعلیمی سال میں تعلیمی سرگرمیوں کا آغاز کردیا جائے گا اس طرح کیڈٹ کالج خاران پر بھی تعمیراتی کام تیز کردیا گیا ہے مزید برآں اسوقت صوبے میں چار ریذیڈیشنل کالجز بمقام تربت ، لورالائی ،خضدار اور ژوب میں تعلیمی سرگرمیاں جاری ہیں جبکہ ریذیڈیشنل کالج اوتھل کو فعال کیا جارہا ہے اسکے ساتھ ساتھ ریذیڈیشنل کالج سبی ،خاران اورقلات کے قیام کیلئے تعمیراتی کام جاری ہیں جو انشا اللہ جلد مکمل کرلئے جائیں گے اسوقت کالجز سیکشن کی کل 40نئی اور 55جاری اسکیموں پر ترقیاتی کام جاری ہے یہ ترقیاتی اسکیمات صوبے میں کالجوں ،تکینکی اداروں،ریذیڈیشنل کالجوں ، کیڈٹ کالجوں اور یونیورسٹیوں کے جال بچھانے میں معاون و مدد گار ثابت ہوں گی۔

(جاری ہے)

40کروڑ روپے کی لاگت سے کوئٹہ کالج ڈائریکٹریٹ کا قیام عمل میں لایا جائے گا ضلع کوئٹہ میں نیشنل یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (NUST)کے کیمپس کے قیام کیلئے زمین خریدنے کی غرض سے 1.2ارب روپے مختص کئے گئے ہیں ،صوبائی حکومت نے مالی سال 2017-18میں 50کروڑ روپے کی خطیر رقم سے صوبے بھر کے 8500طلباء و طالبات کو میرٹ کی بنیاد پر لیپ ٹاپ تقسیم کئے ،مالی سال 2017-18کے ترقیاتی بجٹ میں صوبے کے 30کالجز میں بیچلر لاجز کی تعمیر کیلئے 50کروڑ روپے کی خطیر لاگت سے تعمیرات کی منظوری دیدی گئی ہے۔ مالی سال 2017-18میں صوبے کے 30ڈگری کالجز میں چارسالہ بی ایس ڈگری پروگرام کے کلاسز کا آغاز کردیا گیا ہے جس کے بنیادی ڈھانچے کی فراہمی کیلئے حکومت نے 60کروڑ روپے مختص کردیئے ہیں