چارسدہ ، ملک بھر کے معذور افراد کو مصنوعی اعضاء فراہم کرنے کیلئے بی آئی ایس پی اور غیر سرکاری تنظیم چل کے مابین معاہدہ

پروگرام کا آغاز چارسدہ سے کر کے اس کو بتدریج دیگر اضلاع تک پھیلایا جائیگا، ڈاکٹر بخت سرور کا تقریب سے خطاب

پیر مئی 22:06

ْچارسدہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) ملک بھر کے معذور افراد کو مصنوعی اعضاء فراہم کرنے کیلئے (بی آئی ایس پی ) بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام اور غیر سرکاری تنظیم چل کے مابین معاہدہ ہوگیا جس کاآغاز ضلع چارسدہ سے کیا گیا، اس حوالے سے ڈسٹرکٹ اسمبلی ہال میں ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں معذور مر د و خواتین نے کثیر تعداد میں شرکت کی ۔

اس موقع پر بی آئی ایس پی کے ڈائریکٹر جنرل نیلو فر اور چل تنظیم کے سرابراہ ڈاکٹر بخت سرور نے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ معذور افراد کو معاشرے کا کارآمد شہری بنانے کیلئے بی آئی ایس پی اورچل تنظیم کے مابین معاہدہ طے ہو چکا ہے اور ضلع چارسدہ سے پروگرام کا آغاز کرکے چارسدہ کے معذور مرد و خواتین کو مصنوعی اعضاء فراہم کئے جارہے ہیں تاکہ وہ معاشرے پر بوجھ نہ بنے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ پرو گرام بتدریج دیگر اضلاع تک پھیلایا جائیگا۔بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کر تے ہوئے ے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے ڈی جی نیلو فر نے کہا کہ بی آئی ایس پی عرصہ دراز سے معاشرے کے غریب عوام کے مالی تعاو ن کر رہی ہے اور ہر ماہ مستحق لوگوں کو وظیفہ کے ساتھ ساتھ بچوں کے تعلیمی اخراجات بھی برد اشت کر رہی ہے ۔ انہوں نے معذور افراد کو مصنوعی اعضاء کی فراہمی کے حوالے سے کہا کہ اس حوالے سے اعداد و شمار اکٹھے کئے جا رہے ہیں ۔

متعلقہ عنوان :