وزیراعلیٰ بلوچستان کے اعلان کردہ پیکج کے مطابق زرعی یونیورسٹی بمقام نصیرآباد کیلئے 2.5ارب روپے مختص کئے گئے ہیں 3ارب روپے کی لاگت سے میڈیکل کالج نصیرآباد کی تعمیر کی جائے گی،مشیر خزانہ ڈاکٹر رقیہ ہاشمی

پیر مئی 23:21

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مئی2018ء) وزیراعلیٰ بلوچستان کی مشیر برائے خزانہ کیپٹن (ر) ڈاکٹر رقیہ سعیدہاشمی نے بلوچستان کا مالی سال 2018-19ء کا بجٹ ایوان میں پیش کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ بلوچستان کے اعلان کردہ پیکج کے مطابق زرعی یونیورسٹی بمقام نصیرآباد کیلئے 2.5ارب روپے مختص کئے گئے ہیں 3ارب روپے کی لاگت سے میڈیکل کالج نصیرآباد کی تعمیر کی جائے گی جان لیوا بیماریوں جس میں کینسر،ہیپپاٹائٹس وغیرہ کیلئے 1ارب روپے دیئے جائیں گے 1.

(جاری ہے)

5ارب روپے کی لاگت سے Shelterlessسکولوں کو عمارت فراہم کی جائیں گی صوبے کے معذورافراد کو وظیفہ دیا جائے گا جس پر 50کروڑ روپے لاگت کا تخمینہ ہے ایک ہزار سے زائد ضرورت مند نوجوان جوڑوں کی اجتماعی شادی پروگرام کیلئے 20کروڑ روپے مختص کئے گئے ہیں 50کروڑ روپے کی لاگت سے بلوچستان کے اہل طلباء و طالبات کو میرٹ کی بنیاد پرلیپ ٹاپ دیئے جائیں گے 13کروڑ روپے کی لاگت سے کوئٹہ شہر کی سڑکوں ،اسٹریٹ لائٹس وغیرہ کی مرمت کی جائے گی ،وزیراعلیٰ یوتھ انٹرن شپ پروگرام کے تحت نوجوان طلباء و طالبات کیلئے صوبائی انٹرن شپ پروگرام کا آغاز کیا جارہا ہے جس کے تحت پہلے مرحلے میں500سے زائد اہل طلباء و طالبات کو میرٹ کی بنیاد پر ایک سال کیلئے ماہانہ وظیفہ دیا جائے گا اس کیلئے 10کروڑ روپے مختص کئے گئے ہیں 5کروڑ کی لاگت سے ایکسپو سینٹر بمقام سردار بہادر خان وومن یونیورسٹی کوئٹہ کی تعمیر کی جائے گی۔