کماد کی فصل کو سیراب کرکے گنے کی فی ایکڑپیداوار میں خاطر خواہ اضافہ کیاجاسکتاہے ،ماہرین زراعت

منگل مئی 14:50

فیصل آباد۔15 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) ماہرین زراعت نے کماد کے کاشتکاروں پر زور دیا ہے کہ وہ کماد کی فصل کو پانی کی کمی نہ آنے دیں کیونکہ مئی کے آخر اورماہ جون و جولائی کے دوران موسمی شدت کے پیش نظر پانی کی کمیابی کی وجہ سے کماد کی فصل بہت متاثر ہوتی ہے۔ انہوںنے بتایا کہ کماد کی فصل کو سال میں اوسطاً 16 مرتبہ پانی کی ضرورت ہوتی ہے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے بتایا کہ اگر موسمی شدت اور فصل کی ضرورت کے مطابق کماد کی فصل کو سیراب کیا جائے تو گنے کی فی ایکڑپیداوار میں خاطر خواہ اضافہ ہوتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ جون و جولائی کے علاوہ مارچ اپریل میں تین ہفتے ، مئی تااگست تک ڈیڑھ سے دو ہفتے ، ستمبرسے اکتوبر تک فی ہفتہ اور نومبر سے فروری تک 6 سے 7 ہفتے تک پانی دینا نہایت ضروری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کھاد ڈالنے کے بعد آبپاشی کی اشد ضرورت ہوتی ہے تاکہ اس کے بہترین فوائد اور مطلوبہ مقاصد حاصل کئے جاسکیں۔ انہوں نے کہا کہ برسات کے موسم میں پانی کے تناسب کا خاص خیال رکھنا چاہئے کیونکہ ان ایام میں زیادہ پانی دینے سے گنے کو کیڑا لگنے کا بھی خدشہ رہتا ہے۔

متعلقہ عنوان :