میئر بننے کے بعد مجھے سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے، وسیم اختر

سانحہ 12 مئی کی از سر نو تحقیقات ہونی چاہئیں، معصوم لوگ بلاوجہ مقدمات بھگت رہے ہیں، اگر اسی طرح معاملات چلے تو لوگ بدظن ہو جائیں گے،میئر کراچی وسیم اختر کی عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو

منگل مئی 15:30

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ میئر بننے کے بعد مجھے سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے،سانحہ 12 مئی کی از سر نو تحقیقات ہونی چاہئیں، معصوم لوگ بلاوجہ مقدمات بھگت رہے ہیں، اگر اسی طرح معاملات چلے تو لوگ بدظن ہو جائیں گے ۔

(جاری ہے)

منگل کو عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ سانحہ 12 مئی کی ازسر نو تحقیقات ہونی چاہیے، سانحہ کے اصل حقائق اور چہرے عوام کے سامنے آنے چاہئیں۔

انہوں نے کہا کہ معصوم لوگ بلاوجہ مقدمات بھگت رہے ہیں، اگر اسی طرح معاملات چلے تو لوگ بدظن ہو جائیں گے، ہم مقدمات سے بھاگنے والے نہیں، سامناکریں گے، جعلی مقدمات کا سلسلہ اب بند ہونا چاہیے۔وسیم اختر نے کہا کہ مئیر نامزد ہونے کے بعد مجھ پر 40 مقدمات ڈالے گئے، ایک دن میں میرے خلاف 20،20 ایف آئی ار کاٹی گئیں، مئیر نامزد ہونے کے بعد مجھے سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا گیا۔

متعلقہ عنوان :