مریکہ،اسرائیل اور بھارت کا اتحاد ثلاثہ ایک دوسرے کے مفادات کا تحفظ کر رہا ہے ،ْراجہ فاروق حیدر

اسلامی ممالک مظلوم فلسطینیوں کیخلاف قابض اسرائیلی فوج کے مظالم کا نوٹس لیں اور اس کیخلاف یکجا ہو کر آواز بلند کریں ،ْوزیر اعظم آزاد کشمیر

منگل مئی 16:53

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) آزادجموں وکشمیر کے وزیراعظم راجہ فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ اسلامی ممالک مظلوم فلسطینیوں کے خلاف قابض اسرائیلی فوج کے مظالم کا نوٹس لیں اور اس کے خلاف یکجا ہو کر آواز بلند کریں۔امریکہ،،اسرائیل اور بھارت کا اتحاد ثلاثہ ایک دوسرے کے مفادات کا تحفظ کر رہا ہے۔۔اسرائیل نے فلسطین جبکہ بھارت نے کشمیر کو مقتل گاہ بنا دیا ہے۔

اقوام متحدہ خاموش تماشائی نہ بنے بلکہ اپنا اہم کردار ادا کرتے ہوے فلسطینیوں اور کشمیریوں کے قتل عام کو روکے۔۔بھارت نے کنٹرول لائن پر سنائپر گنوں کے ذریعے خواتین کو نشانہ بنانا شروع کیا ہے اس ظلم پر چپ نہیں رہ سکتے۔۔وزیراعظم نے ان خیالات کا اظہار پاکستان انسٹیٹیوٹ آف پارلیمینٹری سروسز کے زیر اہتمام کشمیر اور فلسطین پر منعقدہ سیمینار سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوے کیا۔

(جاری ہے)

اس موقع پر سینیٹر مشاہد حسین سید،سینیٹر عبدالقیوم، ،سینیٹر میاں عتیق ،،فلسطین کے سفیر ،غلام محمد صفی، نذیر گیلانی عارف کمال حمید لون، آذربائجان اور اردن کے سفیر نے بھی خطاب کیا۔۔وزیراعظم نے اسرائیلی فوج کی جانب سے 60 فلسطینیوں کو شہید اور 2700کو زخمی کرنے کے واقعہ کی شدید مذمت کرتے ہوے اسے انسانیت سوز واقعہ قرار دیا۔انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام کے دل اپنے فلسطینی بھائیوں کے غم میں رنجیدہ ہیں اور ہم ان کے جائز حق کیلیے ان کے ساتھ کھڑے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کشمیری قائدین اور۔عوام نے ہمیشہ فلسطینی عوام کا ساتھ دیا ہے۔۔وزیراعظم نے امریکہ کے روئیے پر شدید مایوسی کا اظہار کیا۔انہوں نے کہا کہ کشمیریوں نے ہمیشہ فلسطینی عوام کا ساتھ دیا ہے مگر فلسطین کے صدر کی جانب سے کشمیریوں کے قاتل مودی کو تمغہ امتیاز دینے پر کشمیری عوام کو بہت دکھ پہنچا۔انہوں نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کا ذکر کرتے ہوکہا کہ بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر کو کشمیریوں کی مقتل گاہ بنا دیا ہے جہاں انسانی حقوق کہ سنگین خلاف ورزیاں کی جا رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی فوج نے حریت قائدین کو جیلوں میں بند کر رکھا ہے جہاں ان کو بنیادی سہولتوں سے بھی محروم رکھا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارتی فوج کنٹرول لائن پر سنائپر گنوں کے ذریعے خاص طور پر خواتین اور بچوں کو نشانہ بنا رہی ہے۔انہوں نے اقوام متحدہ سے اپیل کہ کہ وہ فلسطین اورکشمیر کے اہم معاملات پر ایکٹو رول ادا کرے۔انہوں نے دنیا کے بڑے ملکوں سے بھی کہا کہ وہ اسرائیل اور بھارت کو نہتے افراد کے قتل عام سے باز رکھنے کیلیے اپنا اہم کردار ادا کریں۔

انہوں نے اسلامی ملکوں سے کہا کہ وہ اپنے اختلافات کو ایک طرف رکھتے ہوے اس اہم معاملے پر مشترکہ موقف اپنائیں۔۔وزیراعظم نے جنوبی افریقہ کی جانب سے اسرائیل سے سفیر واپس بلانے کے اقدام کو سراہا اور کہا کہ ایسے ملک جہاں انسانی۔حقوق کہ قدر موجود ہے قابل ستائش ہیں۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوے مشاہد حسین سید نے کہا کہ میں وزیراعظم آزادکشمیر کی بات سے اتفاق کرتاہوں کہ اسلامی ملکوں کو چاہیے کہ وہ اس اہم معاملے پر مشترکہ اور متفقہ موقف اپنائیں تاکہ ان کی بات میں وزن ہو۔

انہوں نے کہا کہ سینٹ میں کشمیر کے حوالے سے ایک مباحثے کا اہتمام بھی کیا جائے گا جبکہ سینٹ کی کمیٹی برائے خارجہ امور کے اجلاس میں وزیراعظم آزادکشمیر جو مدعو کر کے کشمیر پر سیر حاصل گفتگو کی جائے گی۔انہوں نے اسرائیلی فوج کے مظالم پر امریکہ اور بھارت کی جانب سے آنکھیں بند کرنے پر بھی افسوس کا اظہار کیا اور اس بات کا اعادہ کیا کہ کشمیر و فلسطین کیلئے پاکستان اپنے روائتی موقف پر قائم ہے۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کو چاہیے کہ وہ دونوں علاقوں میں قابض بھارتی و اسرائیلی فوج کے مظالم رکوانے کیلیے اپنا کردار ادا کرے۔