سینیٹ نے فلسطین میں اسرائیلی بربریت کی مذمتی قرارداد کی منظوری دے دی

ایوان بے گناہ اور نہتے فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی قابض فوجوں کی جابرانہ ہتھکنڈوں کی مذمت کرتا ہے، سینیٹ کی قرارداد

منگل مئی 17:58

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) سینیٹ نے فلسطین میں اسرائیلی بربریت کی مذمت کے لئے قرارداد کی منظوری دے دی ہے۔ منگل کو ایوان بالا کے اجلاس میں سینیٹ میں قائد ایوان راجہ ظفر الحق نے قرارداد پیش کی۔ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ ایوان بالا عوام کے جذبات کی عکاسی کرتے ہوئے بے گناہ اور نہتے فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی قابض فوجوں کی جابرانہ ہتھکنڈوں کی مذمت کرتا ہے جن کے نتیجے میں 70 بچے، عورتیں اور مرد شہید ہو چکے ہیں جبکہ سینکڑوں زخمی ہیں۔

سینیٹ امریکی سفارت خانہ بیت المقدس منتقل کرنے کے امریکی فیصلے کو مسترد کرتا ہے کیونکہ یہ بین الاقوامی قانون اور اقوام متحدہ کے چارٹر کی خلاف ورزی ہے۔ سینیٹ اسرائیل کی ریاستی دہشت گردی کی مذمت کرتا ہے اور فلسطینیوں کے منصفانہ موقف کے لئے پاکستان کی حمایت اور یکجہتی کا اعادہ کرتا ہے۔

(جاری ہے)

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ ہم یہ محسوس کرتے ہیں کہ اسرائیل مقبوضہ فلسطین اور بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانیت کے خلاف جرائم کر رہے ہیں۔

بے گناہ نہتے شہریوں کو شہید کر رہے ہیں اور جان بوجھ کر اقوام متحدہ کی قراردادوں کی خلاف ورزی کر رہے ہیں اور دونوں ممالک مقبوضہ فلسطین اور مقبوضہ جموں و کشمیر کی آبادی کی صورتحال کو تبدیل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ سینیٹ آف پاکستان فلسطینی عوام کی قربانیوں اور بہادری کو سلام پیش کرتا ہے جو اپنے خون کے ذریعے اسرائیلی قابض فوج کی جارحیت کے سامنے مزاحمت کر رہے ہیں۔ سینیٹ حکومت پر زور دیتا ہے کہ وہ فلسطین اور کشمیر کے تنازعات کے اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حتمی حل کے لئے بین الاقوامی برادری کے ساتھ رابطہ کر کے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا معاملہ اٹھائے۔ ایوان نے قرارداد کی اتفاق رائے سے منظوری دے دی۔