امریکہ بھارت اور اسرائیل کی مکمل پشت پناہی کر رہا ہے،مسلمان ملکوں بالخصوص عرب ممالک کیلئے سوچنے کا مقام ہے کہ وہ ہمیں کہاں لے جا رہے ہیں، بھارت خود کو خطہ میں انگریز کا جانشین سمجھتا ہے، وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان

منگل مئی 18:01

اسلام آباد۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ امریکہ نے مسئلہ کشمیر اور فلسطین کو سرد خانے میں ڈال دیا، امریکہ بھارت اور اسرائیل کی مکمل پشت پناہی کر رہا ہے، امریکہ نے اپنے ہدف کو فلسطین سے مشرق وسطی منتقل کر دیا ہے، مسلمان ملکوں بالخصوص عرب ممالک کیلئے سوچنے کا مقام ہے کہ وہ ہمیں کہاں لے جا رہے ہیں، بھارت خود کو خطہ میں انگریز کا جانشین سمجھتا ہے، مسئلہ کشمیر اور فلسطین کو حل کرنے کیلئے تمام مسلمان ملکوں بالخصوص عرب ممالک کو متحد ہونے اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور بھارتی مظالم کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں اٹھانے کی ضرورت ہے، آزاد کشمیر کے عوام فلسطینوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔

(جاری ہے)

وہ منگل کو یہاں پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف پارلیمنٹری سروسز کے زیر اہتمام سیمینار سے مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کر رہے تھے۔ وزیر اعظم آزاد کشمیر نے کہا کہ کشمیر اور فلسطین کے 70 سالہ دیرینہ تنازعات کے حل میں امریکہ رکاوٹ ہے۔ امریکہ نے دونوں دیرینہ تنازعات کو سرد خانے میں ڈال دیا ہے اور اب اپنے ہدف کو مشرق وسطی منتقل کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ بھارت اور اسرائیل کی پشت پناہی کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بیگناہ کشمیریوں کے خلاف بھارتی فورسز وہی اسلحہ استعمال کر رہی ہیں جو اسرائیلی فورسز نہتے فلسطینی عوام کے خلاف استعمال کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری کب تک مرتے رہیں گے، ہم بھی انسان ہیں، ہماری بھی خواہشات ہیں، کشمیری عزت اور احترام کے ساتھ زندگی گزارنا چاہتے ہیں۔ وزیراعظم آزاد کشمیر نے کہا کہ بھارت خود کو خطہ میں انگریز کا جانشین سمجھتا ہے لیکن کشمیری غیور عوام ایک ارب سے زائد آبادی والے ملک کا بھر مقابلہ کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کو بھرپور انداز میں سلامتی کونسل میں اٹھایا جائے اس مقصد کیلئے نئے سرے سے اقدامات کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ نے اب اپنا ہدف فلسطین سے مشرق وسطی منتقل کر دیا ہے جو عرب ممالک کیلئے سوچنے کا مقام ہے۔ سینیٹر جنرل (ر) عبدالقیوم نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ کشمیر اور فلسطین کے دیرینہ تنازعہ حل کرنے میں ناکام ہو چکی ہے جبکہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جنوبی ایشیاء سے متعلق پالیسی میں مسئلہ کشمیر کو یکسر نظر انداز کر دیا ہے۔ انہوں نے بھارت،، اسرائیل اور امریکہ گٹھ جوڑ کو شیطانی تکون قرار دیا اور کہا کہ اس تکون میں امریکہ بنیادی کردار ادا کر رہا ہے۔