سانحہ 12 مئی کیس، میئرکراچی وسیم اختر سمیت دیگر ملزمان پر فرد جرم عائد

ملزمان کے صحت جرم سے انکار پر عدالت نے آئندہ سماعت پر مقدمے کے گواہوں کو طلب کرلیا

منگل مئی 18:09

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) انسداددہشت گردی کی خصوصی عدالت میں سانحہ 12 مئی کے کیس میں اہم پیش رفت، عدالت نے سانحہ 12 مئی کے ایک مقدمے میں میئرکراچی وسیم اختر سمیت دیگر ملزمان پر فرد جرم عائد کردی۔ملزمان کے صحت جرم سے انکار پر عدالت نے آئندہ سماعت پر مقدمے کے گواہوں کو طلب کرلیا۔منگل کو انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت میں سانحہ 12 مئی کے مقدمات پر سماعت ہوئی۔

عدالت میں میئر کراچی وسیم اختر سمیت دیگر ملزمان پیش ہوئے۔

(جاری ہے)

عدالت کے فاضل جج نے کمرہ عدالت میں موجود ملزمان پر 12 مئی 2007 کو شارع فیصل پر جلاو گھیراو اور سابق چیف جسٹس کا راستہ روکنے سے متعلق دائر ایک مقدمے میں فرد جرم عائد کی جس پر تمام ملزمان نے صحت جرم سے انکار کیا۔ملزمان کی جانب سے فرد جرم سے انکار پر عدالت نے آئندہ سماعت پر کیس کے مزید گواہوں کو طلب کرلیا جبکہ دیگر 3 مقدمات میں وکلا کی عدم حاضری کے باعث باعث فرد جرم عائد نہ ہوسکی۔

بعد ازاں عدالت نے مقدمات کی سماعت 23 جون تک ملتوی کردی۔واضح رہے کہ مقدمات میں میئر کراچی وسیم اختر سمیت 19 ملزمان ضمانت پر رہا ہیں جبکہ 16 ملزمان کو عدالت اشتہاری قرار دے چکی ہے اور ایک ملزم گرفتار ہے۔میئر کراچی وسیم اختر سمیت دیگر ملزمان پر سانحہ 12 مئی کے 7 مقدمات درج ہیں