جامعہ بلوچستان کا 15 واں کانووکیشن جامعہ کے ایکسپو سینٹر میں منعقد ہوا

منگل مئی 18:19

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) جامعہ بلوچستان کا 15 واں کنوکیشن جامعہ کے ایکسپو سینٹر میں منعقد ہوا جس کے مہمان خصوصی گورنر بلوچستان و چانسلر جامعہ بلوچستان محمد خان اچکزئی تھے جس نے صوبائی وزراء صوبائی جامعہ کے سربراہان غیر ملکی کونسل جنرل سیاسی رہنماوں سینیر اساتذہ والدین میڈیا کے نماہندگان سمیت طلبا وطالبات کی بڑی تعداد نے شرکت کی وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر جاوید اقبال نے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔

گورنر بلوچستان نے باقائدہ طور پر کنوکیشن میں پی ایچ ڈی، ایم فل ، گولڈ میڈلسٹ سمیت مختلف شعبہ جات میں دو سو سے زائد ماسٹر ڈگری ایوارڈ کیئے اور اپنے خطاب میں کہا کہ تقسیم اسناد کی تقریب بڑی اہمیت کا عامل ہوتا ہے جس میں طلبہ کو ان کی محنت کا پل ڈگریوں کی صورت میں ملتی ہے اور جامعہ بلوچستان کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ ہر برس علم کے مختلف شعبوں سے اعلیٰ تعلیمی ڈگری ایوارڈ کرتی ہے اور معاشرے کو تعلیم یافتہ اور کار آمد انسانی وسائل مہیا کرتی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ یہ عزت اور اعزاز کی بات ہے کہ میں 15 کنوکیشن پیش کر رہا ہوں۔یہ میرا پانچواں کنوکیشن ہے جو میں اٹینڈ کر رہا ہوں۔ بیشک یہ کامیابی اور یونیورسٹی کی ترقی وائس چانسلر کی لیڈرشپ اور محنت کا نتیجہ ہے۔یونیورسٹی کے کلینڈر میں کنوکیشن کا دن اہم ہوتا ہے۔ آج کل کی دنیا مواقعات کی دنیا ہے اور صوبہ بلوچستان سی پیک کی وجہ سے ملک میں دھیان کا مرکز بن گیا ہے۔

آج اس کنووکیشن کے موقع پر طلبہ جو ڈگری حاصل کر رئے ہے یہ تمام صوبے کا مستقبل ہے اور میں ان تمام طلبہ کو نصیحت کرنا چاہتا ہوں کہ اپنی تعلیم کے ساتھ منسلک رئے جو انکی عملی زندگی میں کامیابی کی ضامن ہے۔ آج کی دنیا Scientific village بن گئی ہے۔ اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کافی حد تک ترقی کر گئی ہے۔ بلوچستان اور پاکستان کی تعلیم یافتہ عوام امن پسند بلوچستان کی خواہش مند ہے۔

اور تمام تعلیم یافتہ لوگ ملک کے معمار ہے اور میں امید کرتا ہو کہ وہ ترقی کرے۔ اور میں جامعہ بلوچستان کی ترقی اور کامیابی کیلئے ہمیشہ کی طرح دعا گو اور اپنی تعاون جاری رکھونگا کنوکیشن کی تقریب میں وائس چانسلر ڈاکٹر جاوید اقبال نے جامعہ کے تعلیمی سرگرمیوں اور مستقبل کے منصوبوں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ آج انتہائی خوشی کا مقام ہے کہ ہمارے طلبہ اور اسکالرز اعلیٰ تعلیم کے حصول کو ممکن بناتے ہوئے ڈگری حاصل کر رئے ہے۔

جامعہ بلوچستان جو صوبے کا اہم علمی درسگاہ ہے جو ماضی کے مشکل حالات اور غیر یقینی صورت حال سے نکل کر آج ترقی اور کامیابیوں کی جانب گامزن ہے۔ گزشتہ برسوں کی بہتر حکمت عملی اور اصلاحات سے جامعہ کی تعلیمی معیار تحقیق کی فروغ اور ترقیاتی منصوبوں کو عملی جامہ پہنایا گیا ہے۔ اکیڈمک کو بہتر بنانے سمیت مالی معاملات کو مستحکم بنانے سمیت تمام شعبہ جات کو سیمسٹر سسٹم سے منسلک کرنے نکل کے خاتمے تمام امتحانات کے بروقت انعقاد کو یقینی بنانے اور تمام پالیسی ساز اداروں کے انعقاد اور یونیورسٹی کے ترقی اور ملازمین کے فلاو بہبود کیلئے مسبت انتظا مات کیئے گئے ہے۔

ہزاروں طلباوطالبات کو نصابی و غیر نصابی سرگرمیوں کے مواقع سمیت روشن مسقبل کی جانب راغب کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جامعہ کے ملکی و بین الحکومی تعلیمی اداروں کے ساتھ بہتر تعلقات استوار کیئے گئے ہے۔ صوبے کے مختلف علاقوں میں یونیورسٹی سب کیمپسز کے قیام تعلیمی سرگرمیوں کے فروغ اور مارکیٹ سے مطابقت رکھنے والے شعبہ جات کی قیام اور ترقیاتی منصوبوں کے بروقت تکمیل کو یقینی بنایا گیا ہے۔