فیصل آباد،نواز شریف کا ممبئی حملوں سے متعلق گمراہ کن بیان اسلام، پاکستان اور مسلمانوں سے غداری کے مترادف ہے،صاحبزادہ حامد رضا

بیان اسلامی جمہوریہ پاکستان کی کمزوری و بدنامی اور ہندو ملک بھارت کی تقویت کا باعث بنا ہے ، اسلام کی رو سے اسلامی ریاست کو نقصان پہنچا کر کسی اسلام دشمن ریاست کو فائدہ پہنچانا بدترین گناہ اور اسلامی تعلیمات کے منافی ہے،چیئرمین سنی اتحاد کونسل

منگل مئی 21:55

فیصل آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) چیئرمین سنی اتحاد کونسل صاحبزادہ حامد رضا کی اپیل پر سنی اتحاد کونسل کے پچاس سے زائدعلماء نے نواز شریف کے بھارت نواز بیان کے خلاف اجتماعی اعلامیہ جاری کر دیا ہے قرآن و حدیث میں اسلامی ریاست کی فوج (مجاہدین) کے خصوصی فضائل اور حقوق بیان ہوئے ہیں اور مسلمانوں کی اسلامی ریاست کی محافظ فوج (مجاہدین) سے محبت کا حکم دیا گیا ہے۔

آن لائن کے مطابق اعلامیہ میں قرار دیا گیا ہے کہ نواز شریف کا ممبئی حملوں سے متعلق گمراہ کن بیان اسلام، پاکستان اور مسلمانوں سے غداری کے مترادف ہے۔ سابق وزیراعظم کا یہ بیان اسلامی جمہوریہ پاکستان کی کمزوری و بدنامی اور ہندو ملک بھارت کی تقویت کا باعث بنا ہے جبکہ اسلام کی رو سے اسلامی ریاست کو نقصان پہنچا کر کسی اسلام دشمن ریاست کو فائدہ پہنچانا بدترین گناہ اور اسلامی تعلیمات کے منافی ہے۔

(جاری ہے)

اس لئے اسلام اور پاکستان سے غداری کے مجرم نواز شریف کے خلاف شریعت، ریاست پاکستان کے آئین اور ملکی قوانین کے تحت سخت ترین کاروائی عمل میں لائی جائے کیونکہ قرآن و حدیث کی رو سے مسلمانوں کو نقصان پہنچانا اور کافروں کی مدد کرنا کفر ہے۔ نواز شریف کے لئے اپنا بیان واپس لے کر توبہ کرنا لازم ہے۔ سنی اتحاد کونسل کے اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ اسلام نے اسلامی ریاست کی فوج (مجاہدین) کے خلاف سازش کر کے اسے کمزور اور متنازعہ بنانے سے منع کیا ہے۔

قرآن و حدیث میں اسلامی ریاست کی فوج (مجاہدین) کے خصوصی فضائل اور حقوق بیان ہوئے ہیں اور مسلمانوں کی اسلامی ریاست کی محافظ فوج (مجاہدین) سے محبت کا حکم دیا گیا ہے۔ لیکن سابق وزیراعظم نواز شریف مسلسل پاک فوج کے خلاف ہرزہ سرائی کر کے اسلام اور پاکستان کی دشمن طاقتوں کا ایجنڈا پورا کر رہا ہے۔ قرآن مجید کی سورہ مائدہ آیت نمبر 51 میں کہا گیا ہے کہ ’’ اے ایمان والو! یہود و نصاری کو دوست نہ بناؤ ‘‘چونکہ ہندو اپنے شرک و کفر اور اسلام دشمنی میں یہودیوں اور عیسائیوں سے بھی بدتر ہیں اس لئے کسی ہندو ریاست کی مدد اشد حرام ہے۔

جید علماء کے مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ شریعت کی رو سے وطن کی محبت ایمان کا حصہ ہے جبکہ نواز شریف کا بھارت نواز بیان حب الوطنی کے سراسر منافی ہے۔ اسلام اور پاکستان کا دشمن ملک بھارت نواز شریف کے بیان کو پاکستان کو بدنام کرنے اور پاکستان پر اقتصادی پابندیاں لگوانے کے لئے استعمال کر رہا ہے۔ نواز شریف کے بیان کے نتیجے میں پاکستان پر عالمی دباؤ میں اضافہ ہو سکتا ہے۔

اسلام اور پاکستان سے محبت کرنے والا ہر فرد نواز شریف کے بیان پر مضطرب ہے۔ قومی سلامتی کمیٹی کا اعلامیہ پوری قوم کے احساسات کا ترجمان ہے۔ پاکستان کے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو غدار وطن کا وکیل صفائی بننے کی بجائے ریاست کے ساتھ کھڑا ہونا چایئے۔ وزیراعظم عباسی سیاسی مصلحتوں کو ریاستی ذمہ داریوں پر حاوی نہ ہونے دیں۔ شہباز شریف بھی ریاست پاکستان یا اپنے بھائی میں سے کسی ایک کا ہاتھ تھام کر اپنی پوزیشن واضع کریں۔

اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ تاریخ کے اس اہم موڑ پر پاکستان کی تمام سیاسی قیادت کو خاموشی یا غیرجانبداری کا رویہ ترک کر کے ریاست کے حق میں اپنا نکتہ نظر پیش کرنا چایئے۔ ن لیگ کے رہبر نواز شریف کا بیان اسلامی ریاست کے خلاف اعلان جنگ ہے اس لئے عدلیہ نواز شریف کا نام ای سی ایل میں ڈالنے اور غداری کا مقدمہ عائد کر اسے گرفتار کرنے کا حکم دے۔

اعلامیہ جاری کرنے والے مفتیوں میں مفتی محمد مقیم خان، مفتی محمد حبیب قادری، علامہ حامد سرفراز، علامہ محمد اکبر نقشبندی، مفتی وسیم رضا، علامہ رضائے مصطفے نقشبندی، مولانا محمد علی نقشبندی، علامہ شمس الرحمن شمس، مفتی مشتاق احمد نوری،مفتی محمد بخش رضوی،مفتی رحمت اللہ ،مفتی غلام عثمان غنی، مفتی ظفر جبار چشتی، علامہ حافظ یعقوب فریدی، علامہ ارشد مصطفائی، علامہ ممتاز ربانی، علامہ مطلوب رضا، مولانا عابد علوی، مفتی امتیاز حسین، مفتی اظہار احمد، مفتی محمد بلال، مفتی احمد رضا، مفتی خلیل قادری، مفتی ظہور اللہ، علامہ محمد سلیم قادری، مفتی شہزاد احمد،مفتی محمد صدیق قادری، مفتی برکات احمد صدیقی، مفتی محمد وسیم، مفتی ناصر قادری اور دیگر شامل ہیں۔