کراچی، بارہ مئی واقعے کی شروع سے تفتیش ہوئی تو میئر کراچی کے ساتھ متحدہ کے اور بھی بہت اہم نام سامنے آسکتے ہیں،فردو س شمیم نقوی

ہم بھی کہتے ہیں کہ درست حقائق اور چہرے لوگوں کے سامنے لائے جائیں اور جو لوگ اس واقعے کے ذمہ دارہیں، انہیں قرار واقعی سزا دی جائے، صدر پاکستان تحریک انصاف کراچی

منگل مئی 21:43

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) پاکستان تحریک انصاف کراچی کے صدر فردو س شمیم نقوی نے کہا ہے کہ اگر بارہ مئی کے واقعے کی شروع سے تفتیش ہوئی ، جیسا کہ میئر کراچی چاہتے ہیں تو میئر کراچی کے ساتھ ساتھ متحدہ کے اور بھی بہت اہم نام سامنے آسکتے ہیں۔ ہم بھی کہتے ہیں کہ درست حقائق اور چہرے لوگوں کے سامنے لائے جائیں اور جو لوگ اس واقعے کے ذمہ دارہیں، انہیں قرار واقعی سزا دی جائے۔

یہ باتیں انہو ںنے پارٹی سیکرٹریٹ ’’انصاف ہائوس‘‘ کراچی سے جاری کردہ اپنے بیان میں کہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ معصوم لوگ مقدمات میں نامزد ضرور ہوتے ہیں مگر وہ جو عوام الناس میں سے ہوں۔ میئر کراچی کا کچھ نہ کچھ قصور توضرور ہے، جبھی انہیں نامزد کیاجارہا ہے۔ میئر کراچی مقدمات کا سامنا کر رہے ہیں، ہر شہری کو قانون کا احترام کرنا چاہئے، لیکن انہوں نے سپریم کورٹ کو سوموٹو نوٹس لینے کا کیوں کہہ دیا، یہ بات سمجھ میں نہیں آئی۔

(جاری ہے)

انصاف سب کے لیے برابر ہونا چاہئے، میئر کراچی اپنے آپ کو دوسروں پر کیوں فوقیت دے رہے ہیں۔ متحدہ کے میئر کا بارہ مئی کے مقدمے میں نامزد ہونا عوام الناس کے لیے لمحہ فکریہ ہے۔ متحدہ کے دھڑوں کو بھی ا س بات پر تنکا تنکا ہو کر بکھر جانا چاہئے۔ اب میئر کراچی حیدر آباد پکا قلعہ، علی گڑھ اور بم بلاسٹ کے تمام تر مقدمات کو دوبارہ کھولنے کا کہہ رہے ہیں، لیکن اس سے تو متحدہ ہی موردِ الزام ٹھہرے گی۔

شاید اس بات کی توجیہ ہم اس حقیقت میں ڈھونڈ سکیںکہ متحدہ اس وقت دھڑوں میں بٹ چکی ہے اور شاید ایک ہی طرح کے مقدمات میں ملزم نامزد ہونے کے بعد متحدہ کے لیڈر ایک بار پھر اتحاد کا کوئی راستہ نکال لیں۔ میئر کراچی کو سیاسی انتقام کا نشانہ اگر کوئی بنا رہا ہے ، تو اس کا نام لینے میں کیا قباحت تھی۔ انہوں نے کہا کہ بارہ مئی کے واقعے میں پچاس لوگ ہلاک ہوئے جن میں وکلاء اور سیاسی کارکنان شامل تھے جو سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کو خوش آمدید کہنے جا رہے تھے۔

افتخار محمد چوہدری کے خلاف محاذ کس نے کھولا تھا اس وقت متحدہ ہی سابق چیف جسٹس آف پاکستان کے خلاف تھی اور ہمارا شک بھی اسی لیے اس کے لیڈروں کی طرف جاتا ہے۔ان شکوک و شبہات سے قطع نظرپاکستان تحریک انصاف بارہ مئی کے واقعے کی از سر نو تفتیش کے حق میں ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ لوگوں کو انصاف ملے ، جو بے قصور ہیں، باعزت بری ہوں اور جن کا جتنا جرم ہے، اسی قدر سزا کے مستحق ٹھہریں۔ #