زرعی شعبے میں بدعنوانی کا خاتمہ اور اصلاحات لانے کے لئے کسانون کے مسائل کا حل وقت کی اولین ضرورت ہے ۔ ڈی جی نیب محمد الطاف باوانی

منگل مئی 22:38

کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) ڈی جی نیب محمد الطاف باوانی نے کہا کہ زرعی شعبے میںبدعنوانی کا خاتمہ اور اصلاحات لانے کے لئے کسانون کے مسائل کا حل وقت کی اولین ضرورت ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو سندھ چیمبر آف ایگریکلچر کے جانب سے ’’ بدعنوانی کی وجہ سے کسانون کو درپیش مسائل ‘‘ عنوان سے مقامی ہوٹل میں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

سیمینار میں سندھ کے دور دراز علاقوں کے کاشتکاروں اور کسانون نے بڑے تعداد میں شرکت کی۔ تقریب میں کسانون نے زرعی فیلڈ میں بدعنوانی کے متعلق ڈی جی نیب کو شکایات بتائیں اور درپیش مسائل سے آگاہ کیا۔ ڈی جی نیب محمد الطاف باوانی نے کہا کہ نیب کسانون کے مسائل سے بخوبی آگاہ ہے زرعی اصلاحات اور زراعت کے شعبے کو مزید مستحکم کرنے کی خاطر متعلقہ حکام سے رابطہ کیا جائے گا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ زرعی شعبے میں بدعنوانی کا خاتمہ اور اصلاحات لانے کے لئے کسانون کے مسائل کا حل وقت کی اولین ضروریات میں سے ہے ۔ ڈی جی نیب محمد الطاف باوانی نے کہا کہ آبادگار اور کسان زرعی اصلاحات اور بہتر نتائج کی خاطر زراعت میں جدید طریقہ کار اور مشینری تکنیک اپنائیں۔ زرعت سے متعلق مسائل حل کے لئے حکومت کے سامنے مسائل اٹھائیںگے ، باردانہ کی تقسیم کا مسئلہ بھی ہم پہلے سے ہی گورنمنٹ کے سامنے اٹھایا ہوا ہے اور شفاف تقسیم نہ ہونے کے متعلق نشاندہی کی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ رویونیو ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کرنے کے لئے یونٹ اضلاع میں کام نہیں کر رہے، یہ مسئلہ بھی گورنمنٹ کے ساتھ اٹھائیںگے۔ نیب تنہا بدعنوانی کی روک تھام کے لئے کافی نہیں ہے، عوام الناس کو بھی اس جہاد میںبڑہ چڑہ کر حصا لینا ہوگا۔

متعلقہ عنوان :