سانحہ سرگودھا درگاہ متولی کے ہاتھوں 20 افراد کے قتل کو سال ہوگیا پر حکومت ضلع بھر کی درگاہوں کا کنٹرول نہ سنبھال سکی

منگل مئی 23:24

سرگودھا (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) سانحہ سرگودھا ،درگاہ متولی کے ہاتھوں 20بے گناہ افراد کے اجتماعی قتل کو ایک سال گزرنے اور پنجاب حکومت کی سخت ہدایات کے باوجود بھی محکمہ اوقاف کی نااہل انتظامیہ ضلع بھرکے درباروں اور آستانوں کیخلاف کارروائی اور ان کا کنٹرول نہ سنبھال سکی،یاد رہے کہ ایک سال قبل یکم اپریل 2017ء کوسرگودھاکے نواحی چک 95 شمالی میں جہاں چار خواتین سمیت 20 افراد کو آستانے پر بے دردی سے قتل کیا گیا اس چک کے بارے میں لوگوں نے بتایا کہ یہاں پر 7 مزید آستانے موجود ہیں جن کے بارے میں وہ زیادہ کچھ نہیں جانتے جہاں روزانہ ہزاروں عقیدت مند آتے ہیں اور لاکھوں روپے ماہانہ ان آستانوں میں لوگ دیے جاتے ہیں جن کا کوئی حساب کتاب نہیں جس پر پنجاب حکومت کی ہدائت پرمحکمہ اوقاف نے بھی ان آستانوں کی تفصیلات اکٹھی کرکے انہیں تحویل میں لینے کیلئے اقدامات شروع کیے مگر ایک سال گزرنے کے باوجود اس حساس ترین مسئلہ کو بھی دباء دیاگیا۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

متعلقہ عنوان :