پاکستان ٹیلی ویژن ریاست کا چینل ہے، حکومت اور کابینہ کی پالیسی کے مطابق پی ٹی وی کے امور چل رہے ہیں ،تمام سیاسی جماعتوں کوپی ٹی وی کے پروگرامز اور ٹاک شوز میں مدعو کیاجاتا ہے،پروگرامات سے متعلق ایوان بالا کی کمیٹی جو ڈیٹا طلب کرے گی مہیا کرینگے، پی ٹی وی چلڈرن چینل کا پی سی ون تیار ہوگیا ہے ،پی ٹی وی پارلیمنٹ چینل کا قیام بھی جلد عمل میں آئے گا،پارلیمنٹ چینل پر قومی اسمبلی،سینٹ اور دونوں ایوانوں کی قائمہ کمیٹیوں کے اجلاس براہ راست نشر ہونگے ،پی ٹی وی کی گذشتہ سال کی رمضان ٹرانسمیشن کامیاب رہی، اس سال بھی ایک اچھی رمضان ٹرانسمیشن لا رہے ہیں ،رمضان المبارک میں لوگ پرائیویٹ چینلز کی نسبت پی ٹی وی کے پروگرامات گو ترجیح دیتے ہیں کیونکہ پی ٹی وی پر پروگراما ت ایک سخت ایڈیٹوریل جائزہ کے بعد نشر ہوتے ہیں،پی ٹی وی اے جے کے چینل آزاد کشمیر ،گلگت بلتستان میں دکھایا جاتا ہے،اس کے ذریعے بھارتی پرپیگنڈے کا بھی موثر جواب جارہا ہے،

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب کا ایوان بالا کی قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں اظہار خیال

منگل مئی 23:30

اسلام آباد۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 مئی2018ء) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے پی ٹی وی کی تنظیم نو کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان ٹیلی ویژن ریاست کا چینل ہے، حکومت اور کابینہ کی پالیسی کے مطابق پی ٹی وی کے امور چل رہے ہیں ،تمام سیاسی جماعتوں کوپی ٹی وی کے پروگرامز اور ٹاک شوز میں مدعو کیاجاتا ہے،پروگرامات سے متعلق ایوان بالا کی کمیٹی جو ڈیٹا طلب کرے گی مہیا کرینگے، پی ٹی وی چلڈرن چینل کا پی سی ون تیار ہوگیا ہے ،پی ٹی وی پارلیمنٹ چینل کا قیام بھی جلد عمل میں آئے گا،،پارلیمنٹ چینل پر قومی اسمبلی،،سینٹ اور دونوں ایوانوں کی قائمہ کمیٹیوں کے اجلاس براہ راست نشر ہونگے ،پی ٹی وی کی گذشتہ سال کی رمضان ٹرانسمیشن کامیاب رہی،اس سال بھی ایک اچھی رمضان ٹرانسمیشن لا رہے ہیں ،،رمضان المبارک میں لوگ پرائیویٹ چینلز کی نسبت پی ٹی وی کے پروگرامات کو ترجیح دیتے ہیں کیونکہ پی ٹی وی پر پروگراما ت ایک سخت ایڈیٹوریل جائزہ کے بعد نشر ہوتے ہیں،پی ٹی وی اے جے کے چینل آزاد کشمیر ،گلگت بلتستان میں دکھایا جاتاہے،اس کے ذریعے بھارتی پرپیگنڈے کا بھی موثر جواب جارہا ہے،وہ منگل کو ایوان بالا کی قائمہ کمیٹی اطلاعات،نشریات ،قومی تاریخ و ادبی ورثہ کے اجلاس میں اراکین کمٹیی کے مختلف سوالات پر اظہار خیال کر رہی تھیں ۔

(جاری ہے)

قائمہ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت چیئرمین کمیٹی فیصل جاوید نے کی ۔ایم ڈی اے پی پی مسعود ملک ،،پیمرا ،پی ٹی وی ،پی این سی اے ،لوک ورثہ اور وزارت اطلاعات و نشریات کے دیگر ماتحت اداروں کے حکام اجلاس میں شریک تھے ۔وفاقی وزیر مریم اورنگزیب نے کہا کہ آج اجلاس میں یہ کہا گیا ہے کہ پی ٹی وی حکومتی چینل ہے یا صرف کسی ایک پارٹی کو کوریج دی جارہی ہے ،اسکی وضاحت ضروری ہوچکی ہے ۔

پاکستان ٹیلی ویژن پر پارلیمنٹ کے اجلاس اور اجلاس میں اپوزیشن کی تقاریر بھی براہ راست دکھائی گئیں،پی ٹی وی کے حالات حاضرہ اور دیگر پروگرامات میں اپوزیشن کی تمام جماعتوں کو مدعو کیا جاتا ہے، اس کا مکمل ڈیٹا ہمارے پاس موجود ہے ،اگر کمیٹی اس ضمن میں ڈیٹا طلب کریگی تو مہیا کرینگے ۔انہوں نے کمیٹی کو بتایا کہ پی ٹی وی بولان ،پی ٹی وی نیشنل اور پی ٹی وی اے جے کے کے ذریعے مقامی زبان ،ثقافت ، میوزک اور سیاحت کو فروغ دیاجارہا ہے ،پی ٹی وی نے خبروں کے حوالے سے بھی اپنی ساکھ کو برقرار رکھا ہے ،پی ٹی وی کی خبر کی کبھی تردید نہیں آئی ، پی ٹی وی میں تمام معاشرتی‘ثقافتی اورمذہبی اقدار کو برقرار رکھنے کے لئے ایک سخت ایڈیٹوریل پالیسی رکھی گئی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی وی گلوبل سٹیلا ئیٹ کے ذریعے پوری دنیا میں دیکھا جاتا ہے ،اس حوالے سے ایک مانیٹرنگ ٹیم بھی بنائی گئی ہے جو تمام نشریات مانیٹر کرتی ہے ۔ پی ٹی وی ورلڈکے حوالے سے مریم اورنگزیب نے بتایا کہ پی ٹی وی ورلڈ کی نشریات پر ہمیں فخر ہے ،تجربہ کار نوجوانوں کی ٹیم اچھے انداز میں پروگرامات پیش کر رہی ہے،،پاکستان میں تمام غیر ملکی سفارتخانے پی ٹی وی ورلڈ دیکھتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ یہ تاثر غلط ہے کہ پی ٹی وی دیکھنے والوں کی تعداد کم ہوئی ہے ،اب بھی پورے پاکستان میں سب سے زیادہ پی ٹی وی کے چینلز دیکھے جاتے ہیں ،لوگوں کی ایک بڑی تعداد پرائم ٹائم میں حالات حاضرہ کے پروگرامات کی بجائے انٹرٹینمنٹ کے پروگرامات کو ترجیح دیتی ہے ۔وفاقی وزیر مریم اورنگزیب نے کمیٹی کو بتایا کہ پیمرا کے کوڈ آف کنڈیکٹ کے مطابق تمام ٹی وی چینلز 10فیصد سماجی ایشوز سے مواد نشر کرنے کے پابند ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ سیکرٹری اطلاعات و نشریات سردار احمد نواز سکھیرا اور ان کی ٹیم نے پی ٹی وی کو بہتر بنانے پر توجہ مرکوز کی ہے جس کی بدولت آج پی ٹی وی ہر لحاظ سے بہتر ادارہ ہے ،پہلی مرتبہ پی ٹی وی ہیڈ کوارٹرز میں بیٹھے ہوئے ہوئے پروڈیوسرز ،ریسرچرز کو پی ٹی وی سٹیشنز پر بھجوایا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی وی میں چھ سے ساڑھے چھ ہزار ملازمین ہیں ،اگر پی ٹی وی کے انسانی وسائل کا مکمل استعمال یقینی بنایا جائے تو پنشن سمیت تمام مسائل حل ہوسکتے ہیں ۔

پی این سی اے کی سرگرمیوں کے حوالے سے وزیراطلاعات مریم اورنگزیب نے بتایا کہ پی این سی اے نے ثقافت ،قومی ورثے کے فروغ کے لئے اہم کردار ادا کیا ہے ،پی این سی اے نے متعدد فیسیٹول منعقد کرائے جس میں چین ،،ترکی،، ایران اور دیگر ممالک نے بھی شرکت کی ہے ۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی وی سپورٹس بھی کامیابی سے چل رہا ہے ،،ہاکی ،فٹ بال ،سکواش ،،بیڈ منٹن ،ویمن گیمز ، سپورٹس نیوٹریشن اور دیگر پروگرامات چلا ئے جارہے ہیں ۔

فلم پالیسی کے حوالے سے بتایا کہ پہلی مرتبہ فلم و کلچرپالیسی کا اعلان کیا گیا ہے ،اعلان کے ساتھ ہی بجٹ میں فلم بنانے کے آلات کی برآمد گی پر ٹیکس چھوٹ اور دیگر مراعات دی گئیں ،آرٹسٹس کی عزت نفس بحال رکھنے کے لئے آرٹسٹس اسسٹنٹ فنڈ قائم کیا گیا ہے ،اس فنڈ کے تحت آرٹسٹس اے ٹی ایم کے ذریعے رقوم نکلوا سکیں گے ،اس حوالے سے میکنزم زیر غور ہے۔