فاٹا کے انضمام کا بل نہیں لایا جارہا تو اس سے ہٹ کر کسی آئینی ترمیم کا حصہ نہیں بنیں گے، پی ٹی آئی اور پی پی کے ارکان کا موقف

بدھ مئی 15:56

اسلام آباد۔ 16 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 مئی2018ء) پاکستان پیپلز پارٹی اور پاکستان تحریک انصاف نے فاٹا کے انضمام کے حوالے سے حکومتی موقف کو تسلیم کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر فاٹا کے انضمام کا بل نہیں لایا جارہا تو ہم اس سے ہٹ کر کسی آئینی ترمیم کا حصہ نہیں بنیں گے۔

(جاری ہے)

بدھ کو قومی اسمبلی میں تحریک انصاف کے رکن ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ فاٹا کے انضمام میں تاخیر ہونی چاہیے‘ اگر قیام پاکستان کے وقت اور اٹھارہویں ترمیم کے وقت انفراسٹرکچر کی تعمیر کی شرط عائد ہوتی تو یہ دونوں کام نہیں ہو سکتے تھے۔

فاٹا کے حوالے سے جامع بل آنا چاہیے۔ پیپلز پارٹی کے عبدالستار بچانی نے کہا کہ فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام کے حوالے سے اطلاعات تھیں اب کہا جارہا ہے کہ انضمام کا بل نہیں آرہا۔ ہم اس سے ہٹ کر کسی آئینی ترمیم کا حصہ نہیں بنیں گے۔ اس کے ساتھ ہی پی ٹی آئی اور پیپلز پارٹی کے ارکان واک آئوٹ کرگئے۔