پکوڑے، سموسے اور کچوری کو افطاری کا حصہ نہ بنایا جائے، طبی ماہرین

بدھ مئی 16:00

پکوڑے، سموسے اور کچوری کو افطاری کا حصہ نہ بنایا جائے، طبی ماہرین
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 مئی2018ء) طبی ماہرین نے روزہ داروں کو افطار میں تلی ہوئی اشیاء سے پرہیز کرنے اور پکوڑے، سموسے اور کچوری کو افطاری کا حصہ نہ بنا نے کی ہدایت کی ہے جبکہ مصالحہ دار اشیائے خوردونوش بھی استعمال نہ کی جائیں۔

(جاری ہے)

طبی ماہرین نے کہا ہے کہ افطاری کرتے ہوئے زیادہ ٹھنڈا اور کھٹا شربت استعمال نہ کیا جائے کیونکہ ایسا کرنے سے گلہ خراب اورپھر بخار ہونے کا اندیشہ ہوتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ افطاری سادہ کی جائے اور کھانے میں سبزیوں کا استعمال کیا جائے جبکہ گوشت صرف ضرورت کے مطابق ہی کھایا جائے۔ انہوں نے کہاکہ روزہ دار گھی میں پکی ہوئی اشیاء کا استعمال بھی کم سے کم کریں بلکہ عام زندگی میں بھی تلی ہوئی اشیاء سے پرہیز ہی کیا جائے کیونکہ چکنائی کا استعمال بہت سے بیماریوں کو جنم دیتا ہے۔