قلات میں تھری جی اور وائی فائی انٹرنیٹ کی سہولت ہی دستیاب نہیں،روبینہ عرفان

پانچ سال میں بھوک افلاس اور پانی کے مسئلے کا کسی کو خیال نہیں آیا ،اسکولوں میں ٹیچر نہیں صحت کے سہولتیں دستیاب نہیں ہے ،سابق سینیٹر

بدھ مئی 20:34

قلات(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 مئی2018ء) سابق سینیٹر روبینہ عرفان نے کہا ہے کہ پانچ سال اقتدار کا مزہ لینے کے بعد حکومت کا سورج غروب ہونے پر لیپ ٹاپ تقسیم کرنے کا اب خیال آگیاہے ،لیپ ٹاپ کس کام آئے گی جبکہ قلات میں تھری جی اور وائی فائی انٹرنیٹ کی سہولت ہی دستیاب نہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز وزیر اعلیٰ بلوچستان کے لیپ ٹاپ اسکیم کے تحت تقسیم لیپ ٹاپ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،سابق سینیٹر بی بی روبینہ عرفان نے کہا ہے کہ پانچ سال میں بھوک افلاس اور پانی کے مسئلے کا کسی کو خیال نہیں آیا ،اسکولوں میں ٹیچر نہیں صحت کے سہولتیں دستیاب نہیں ہے ،صوبائی حکومت کو اب غریب عوام کا خیال آگیا جبکہ حکومت کے سورج اب غروب ہو نے والا ہے ،انہوں نے کہا کہ طلباء و طالبات کو لیپ ٹاپ تقسیم کر نا اچھی بات ہے مگر صوبائی حکومت نے اصل مسائل کو حل کرنے کے لئے کوئی بھی قدم نہیں اٹھا یا ہے اور اصل مسائل سے چشم پو شی کیا جارہا ہے، انہوں نے کہا کہ میری اسکیمات کی تختیوں کو نکال کر اپنے نام کی تختیاں لگائی جارہی ہیں لیکن خود کام نہیں کرتے ہیں ،انہوں نے کہا کہ دوسروں کے ترقیاتی اسکیموں کو اپنے نام کر نا عوام کو دھوکہ دینے کے مترادف ہیں ،انہوں نے کہا کہ ہمیں ایک نسل نہیں ایک بلوچستانی اور ایک پاکستانی بن کر سوچنا چاہیے اور اپنے ملک کی ترقی اور خوشحالی کے لئے محنت کرنی چاہیے۔