سینیٹر شیری رحمان کا ملک بھر میں بجلی کی طویل لوڈ شیڈنک پر تشویش کا اظہار

پارلیمان کو اندھیرے میں ڈبونے والی حکومت ملک سے اندھیرے کیسے ختم کر سکتی ہے، آدھے ملک میں بجلی بریک ڈان کی وجہ سے غائب ہے جبکہ آدھے ملک میں پہلے سے موجود نہیں تھی،اسلام آباد میں بجلی نہ ہونا دنیا بھر میں پاکستان کی بدنامی کا باعث بنے گا، بجلی کی مکمل بحالی میں ناکامی حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے،سینیٹ میں قائد حزب اختلاف

بدھ مئی 21:21

سینیٹر شیری رحمان کا ملک بھر میں بجلی کی طویل لوڈ شیڈنک پر تشویش کا ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 مئی2018ء) سینیٹ میں قائد حزب اختلاف سینیٹر شیری رحمان نے ملک بھر میں بجلی کی طویل لوڈ شیڈنک پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پارلیمان کو اندھیرے میں ڈبونے والی حکومت ملک سے اندھیرے کیسے ختم کر سکتی ہے، آدھے ملک میں بجلی بریک ڈان کی وجہ سے غائب ہے جبکہ آدھے ملک میں پہلے سے موجود نہیں تھی،،اسلام آباد میں بجلی نہ ہونا دنیا بھر میں پاکستان کی بدنامی کا باعث بنے گا، بجلی کی مکمل بحالی میں ناکامی حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔

بدھ کو قائد حزب اختلاف سینیٹ سینیٹر شیری رحمان نے ملک بھر میں بجلی کی طویل لوڈ شیڈنک پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کہ آدھے ملک میں بجلی بریک ڈان کی وجہ سے غائب ہیجبکہ آدھے ملک میں پہلے سے موجود نہیں تھی۔

(جاری ہے)

بریک ڈان کی تحقیقات کرائی جائے اوراس کی وجوہات اور تمام حقائق سامنے لائے جائیں۔سخت گرمی میں بجلی کا نہ ہونا حکومت کی نا اہلی کا ثبوت ہے۔

حکومت نے اندھیرے مٹانے کا وعدہ کیا تھا یا بجلی مٹانے کا۔ پارلیمان کو اندھیرے میں ڈبونے والی حکومت ملک سے اندھیرے کیسے ختم کر سکتی ہے۔۔اسلام آباد میں پوری دنیا کے سفارتخانے موجود ہیں۔۔اسلام آباد میں بجلی نہ ہونا دنیا بھر میں پاکستان کی بدنامی کا باعثبنے گا۔ بجلی کی مکمل بحالی میں ناکامی حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔