فیصل آباد،دندان سازوں کا ہیلتھ کیئر کمیشن کیخلاف ضلع کونسل چوک میں دھرنا

بدھ مئی 23:50

فیصل آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آئی این پی۔ 16 مئی2018ء) دندان سازوں نے ہیلتھ کیئر کمیشن کیخلاف ضلع کونسل چوک میں دھرنا اور چیف جسٹس سمیت آرمی چیف سے فوری طور پر کارروائیاں بند کرنے کی اپیل کردی۔ اس موقع پر ریلی بھی نکالی گئی، ریلی سے شرکاء نے خطاب کیا ہم محب وطن اور پر امن شہری ہیں،شعبہ دندان سازی ہمارا واحد ذریعہ معاش ہے،ہم ملک کے 80 فیصد عوام کی خدمت کے ساتھ ساتھ اپنے خاندانوں کی کفالت بھی کررہے ہیں،مگر کچھ عرصہ سے پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن نے عطائیت کے خاتمہ کیلئے چیف جسٹس آف پاکستان کے حکم نامہ کے مطابق صوبہ پنجاب کے ہزاروں دندان سازوں پر عرصہ حیات تنگ کردیا ہے،ہیلتھ کیئر کمیشن نے ظالمانہ کارروائیوں کے ذریعے پنجاب کے مختلف شہروں میں سینکڑوں دندان سازوں کی دکانیں سیل کر دی ہیں۔

(جاری ہے)

جس وجہ سے پنجاب کے ہزاروں دندان ساز نا صرف عدم تحفظ ، خوف و حراس اور کرب ناک ذہنی کیفیت میں مبتلا ہیں بلکہ ان کے خاندان فاقہ کشی پر مجبور ہیں۔ ان خیالات کا اظہار گزشتہ روز فیصل آبادکے دندان سازوں کی جانب سے ضلع کونسل کے سامنے ہونے والے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے ان کے نمائندوں محمد شاہد ندیم، غلام مصطفی، منیر احمد ساجد، شیخ محمد صدیق، سیکرٹری انفارمیشن فیض رسول اور ٹیکنیکل ایڈوائزر فرقان امرائو نے کیا ان نمائندوں نے کہا کہ ہم صرف دانت بنانے کا کام کرتے ہیں جو کہ ایک ٹیکنیکل کام ہے۔

برسہا برس سے ہم ڈاکٹروں کے مریضوں کیلئے دانت بناکر دیتے ہیں جبکہ غریب مریضوں کو ہم خود مصنوعی دانت لگا کر دیتے ہیں۔ ان نمائندوں نے مزید کہا کہ ہم بھی اسی دھرتی کے فرزند ہیں اور ہم بھی اپنے بیوی بچوں کیلئے روزی کمانے کا حق رکھتے ہیں۔ لہٰذا ہم چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار اور وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف سے دردمندانہ گزارش کرتے ہیں کہ ہیلتھ کیئر کمیشن کو کریک ڈائون کے ذریعے ہمیں حراساں کرنے سے روکا جائے ، ہمیں بے روزگاری ، ہمارے خاندانوں کو فاقہ کشی اور مایوسیوں کے اندھیرے سے نکالنے کیلئے ہمارے جائز مطالبات پر ہمدردانہ غور کرتے ہوئے ہمارے کام کی نوعیت کا تعین کرکے قانون میں ازسر نو مناسب ترمیم اور متعین شدہ حدود کے مطابق ہمیں تجربہ کی بنیاد پر رجسٹر کرکے کام کرنے کی اجازت دی جائے۔