مشروم کی 150 اقسام کھانے کے قابل ہیں، ہزاروں لوگ مشروم کی ایکسپورٹ کے ذریعے قیمتی زرمبادلہ کما رہے ہیں، ماہرین زراعت

جمعرات مئی 14:39

فیصل آباد۔17 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 مئی2018ء) زرعی ماہرین نے کہاہے کہ مشروم کی بے شمار اقسام اس وقت تک دریافت ہوچکی ہیں جن میں 150 اقسام کھانے کے قابل ہیں جن میں سے 50 کے قریب بے حد لذیذ،50 درمیانے درجے کی ذائقہ دار اور 50 کم لذت کی حامل ہیں جن کی بیرون ملک برآمد کے ذریعے ہزاروںافراد ملک کیلئے کروڑوں روپے کا قیمتی زرمبادلہ کما رہے ہیں لہٰذا اگر حکومت مشروم جسے غذااور دوادونوں طریقوں کیلئے استعمال کیا جاسکتا ہے کی کاشت کی حوصلہ افزائی کرے تو اس سے مزید بہتر نتائج حاصل کئے جاسکتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ مشروم میں 30 سے 35 فیصد تک پروٹین ، 25 سے 30 فیصد تک وٹامن ڈی اور دیگر وٹامنز بھی ہوتے ہیں۔ا نہوں نے بتایا کہ مشروم میں کیلشیم ، فاسفورس ، دیگر نمکیات بھی انسانی جسم کیلئے انتہائی مفید ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ اس میں نشاستہ اور روغنیات بہت کم مقدار میں پائے جاتے ہیں جس کی بناء پر یہ شوگر اور دل کے امراض میں مبتلا مریضوں سمیت غریب لوگوں کیلئے مثالی غذا ہے۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ جو خواتین اپنے آپ کو سمارٹ رکھنا چاہتی ہیں وہ مشروم استعمال کر کے ڈائٹنگ کئے بغیر مطلوبہ نتائج حاصل کرسکتی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ مشروم دیگر غذائی اعتبار اور اپنے اجزاء کے باعث انسان کیلئے انتہائی مفید ثابت ہوئی ہے۔

متعلقہ عنوان :