نوشہرہ میں ایف سی ٹل سکاوٹ کے قافلے پر خودکش حملہ،سات اہلکارسمیت14افرادزخمی

جمعرات مئی 18:00

نوشہرہ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 مئی2018ء) نوشہرہ مال روڈ ضلع کچہری چوک ریلوے پھاٹک کے قریب ایف سی ٹل سکاوٹ کی کانوے پر خود کش حملے کے نتیجے میں ایف سی کی گاڑی میں سوار سات اہلکاروں سمیت چودہ افراد زخمی ہوگئے۔ جن میں تین کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔ سات سویلین زخمیوں میں دوخاتون بھی شامل ہے۔ ایک سویلین گاڑی کو بھی نقصان پہنچاخود کش بمبار نے خود کو ایف سی کی گاڑی سے ٹکرا دیااور زور دار دھماکہ ہوا جس سے ایف سی کی گاڑی میں آگ لگ گئی۔

سیکورٹی فورسز ، پولیس اور ریسکیو1122 موقع پر پہنچ گئے اور فائربریگیڈ نے آگ بجھانے کا کام شروع کیا بارہ زخمیوں کوسی ایم ایچ نوشہرہ اور جبکہ دو زخمیوں کوڈی ایچ کیو نوشہرہ منتقل کردیاگیا ۔ تفصیلات کے مطابق جمعرات کے روز دن دو بجکر دس منٹ پر نوشہرہ ضلع کچہری مال روڈ ریلوء پھاٹک کے قریب خود کش بمبار نے ایف سی ٹل سکاوٹ کی گاڑی کو نشانہ بنایا۔

(جاری ہے)

جس کی وجہ سے گاڑی میں سوار ایف سی کے چھ اہلکارشدید زخمی ہوگئے اور گاڑی کو آگ لگ گئی۔ جبکہ اٹھ سویلین افراد بھی زخمی ہوگئے جس میں ایک سیکورٹی اہلکار بھی شامل ہے ۔ واقعے کی اطلا ع ملتی ہے سیکورٹی فورسز نے پورے علاقے کی گھیرا میں لے لیا اور مال روڈ اور جی ٹی روڈ کو ہر قسم کی ٹریفک کے لئے بند کردیا۔ اسٹیشن کمانڈر نوشہر ہ بریگیڈئیرنذیر حسین خان، ڈی سی نوشہرہ خواجہ سکندر ذیشان، ڈی پی او نوشہرہ شہزاد ندیم بخاری موقع پر پہنچ گئے اور ریسکو1122 اور فائربریگیڈکی گاڑیاں اپنے سربراہ ڈاکٹر میر عالم کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے ۔

اور فوری طور پرایف سی کی گاڑی کی آگ بجھانے کی کوشش کی گئی اور بارہ زخمیوں کو ریسکیو 1122کی گاڑیوں کے زریعے سی ایم ایچ نوشہرہ پہنچایاجبکہ دو کو ڈی ایچ کیو ہسپتال نوشہرہ منتقل کردیا گیا سی ایم ایچ کی ایمبولنس گاڑیوںنے زخمیوں کوسی ایم ایچ منتقل کیا۔ خود کش کی لاش دوٹانگیں ، سر اور جسم ایمبولنس کے ذریعے ڈی ایچ کیوہسپتال نوشہرہ منتقل کردئیے گے۔

پولیس نے موقع پر ڈی ائی جی مردان رینج محمد عالم خان شنواری اور حساس اداروں کے اعلیٰ حکام بھی پہنچے گئے اور سی ٹی ڈی پولیس نے کرائم سین اور شواہد اکٹھے کیے اورنوشہرہ پولیس نے بھی ان کے ساتھ بھرپور تعاون کیاگیا۔ میڈیا سمیت کسی کو بھی آگے آنے کی اجازت نہیں دی گئی۔ دھماکے سے سویلن میں افاق احمد ،مسمات تنویر ، نورین، مسمات رشیدہ، بشیر ،عدنان، عبدالرحمن جبکہ فوجی زخمیوں میںجواد علی، ہارون ، ذیشان، جواد، ہدایت، صبیح اللہ شامل ہیں۔

ایک زخمی کی شناخت نہ ہوسکی۔ ایک زخمی کی انکھ بھی ضیاع ہوگئی ہے۔تین زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے فائر بریگیڈ کی گاڑیوںنے ایف سی کی گاڑی کی اگ بجھائی تاہم گاڑی دھماکہ کی وجہ سے جل گئی۔ جی ٹی روڈ پر تقریبا ڈھائی گھنٹے تک ٹریفک معطل رہی۔ سیکورٹی فورسز کی بھاری نفری نے عوام او رمیڈیا کو اگے جانے کی اجازت نہیں دی بم ڈسپوزل سکواڈ نے پورے علاقے میں سرچ کیا سراغ رساں کتوں نے بھی اس میں حصہ لیا اور تقریبا ساڑے چار بجے ٹریفک بحال کردی گئی۔علاقے میں زبردست خوف ہو ہراس پھیل گیا۔