شد ید غذائیت کی کمی کے شکار 246 بچوں کو ہسپتال میں داخل کرایا گیا ، اے ڈی سی

جمعرات مئی 20:56

راولپنڈی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 مئی2018ء) ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ہیڈ کوارٹر راولپنڈی صائمہ یونس نے کہا ہے کہ بچوں اور حاملہ خواتین میں غذائیت کی قلت کیلئے خاتمہ کیلئے قائم ضلعی کمیٹی کے تحت تمام متعلقہ محکمے مکمل ہم آہنگی سے کام کر رہے ہیں اور مارچ اور اپریل میں مجموعی طو ر پر 82ہزار چھ سو سے زائد بچوں کو ملٹی نیوٹرنٹ ساشے دیئے گے تاکہ ان کو غذائیت کی قلت سے محفوظ رکھا جائے۔

انہوںنے کہاکہ غذائیت کے قلت کے خاتمہ کیلئے تمام متعلقہ محکموں کو مکمل تعاون کے ساتھ مستقل مزاجی سے کام کر نا ہو گا اور اہداف کا تعین کر کے ماہانہ بنیادوں پرکارکردگی کا جائزہ لینا ہو گا تاکہ تمام کوششوں کو نتیجہ خیز بنایا جا سکے۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے غذائیت کی قلت کیلئے خاتمہ کیلئے قائم ضلعی کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔

(جاری ہے)

اجلاس میں محکمہ صحت، بہبود آبادی، معاشرتی بہبود ، ماہی پروری، زراعت اور دیگر متعلقہ محکموں کے نمائندوں نے شرکت کی۔ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر صائمہ یونس نے کہاکہ مارچ اور اپریل میں شدید غذائیت کی کمی کے شکار 246بچوں کو ہسپتال میں داخل کرایا گیا جبکہ اس سے پہلے ہسپتالوں میں مجموعی طور پر 444شدیدغذائیت کی کمی کے شکار بچے ہسپتالوں میں داخل تھے ۔انہوںنے کہاکہ مارچ اور اپریل کے مہینوں میں جدید علاج کے بعد 280بچوں کو ہسپتالوں سے ڈسچارج کر دیا گیا۔

متعلقہ عنوان :